بلوچستان میں بہتری کی بجائے شہہ دی جارہی ہے ، صوبے کیلئے کوئی کچھ نہیں کررہا، ایجنسیوں کا کردار مساوی ہوناچاہیے : جمالی

بلوچستان میں بہتری کی بجائے شہہ دی جارہی ہے ، صوبے کیلئے کوئی کچھ نہیں کررہا، ...
بلوچستان میں بہتری کی بجائے شہہ دی جارہی ہے ، صوبے کیلئے کوئی کچھ نہیں کررہا، ایجنسیوں کا کردار مساوی ہوناچاہیے : جمالی

  

لاہور(مانیٹرنگ ڈیسک)سابق وزیراعظم میرظفراللہ جمالی نے کہاہے کہ بلوچستان کے حالات بہترکرنے کی بجائے شہہ دی جارہی ہے جو صرف سیاسی انتخابی کھیل ہے ، موجودہ حکومت نے ساڑھے چارسال میں کچھ نہیں کیا، کوئی حادثہ ہوا تو ذمہ داران کا تعین ابھی سے کرلیناچاہیے ۔

نجی چینل کے مطابق میر ظفراللہ جمالی نے کہاکہ پرویز مشرف نے بلوچستان میں بگاڑپیدا کیاتو موجودہ حکومت ساڑھے چار سال کیاکرتی رہی ہے ؟ معاملات معافی تلافی اور پیکجز سے حل ہونیوالے نہیں ، سرجوڑ بیٹھنے اور عملی اقدامات کی ضرورت ہے ۔اُن کاکہناتھاکہ وقت کم ہے ، انتخابات سے قبل بلوچستان کا کچھ کرناہوگا،اختر مینگل باورکرارہے ہیں کہ انتخابات اُن کی ترجیح نہیں ۔اُنہوں نے کہاکہ ایجنسیوں کا کردار کیاصرف بلوچستان تک محدود ہے ؟کیاامریکہ میں سی آئی اے ، ایف آئی یو یا پینٹاگون کا کوئی کردار نہیں ۔ ایجنسیاں مکمل سسٹم کا حصہ ہیں ، تمام صوبوں میں ان کا کردار ہوناچاہیے ۔

اُنہوں نے کہاکہ اسلام آباد میں صوبے کے لیے جوکچھ ہوناچاہیے تھا، وہ نہیں ہوا، حکمران بلوچستان سے متعلق مجرمانہ غفلت برتتے ہیں ، معاملات ہاتھ سے نکل رہے ہیں اور اگر کوئی حادثہ ہواتو ذمہ داران کا تعین بھی ابھی سے کرلیناچاہیے ۔سابق وزیراعظم نے کہاکہ بدقسمتی سے اب بھی بلوچستان پر سیاست چمائی جارہی ہے ،نوازشریف، عمران خان اور منورحسن نے اخترمینگل کی حمایت کی اوریہ ملاقاتیں صرف سیاسی انتخابی کھیل ہیں۔

مزید :

لاہور -