سپریم کورٹ نے سابق چیئرمین اوگرا توقیر صادق کی گرفتاری اور تعیناتی کے ذمہ داران کی نشاندہی کا حکم دیدیا

سپریم کورٹ نے سابق چیئرمین اوگرا توقیر صادق کی گرفتاری اور تعیناتی کے ذمہ ...
سپریم کورٹ نے سابق چیئرمین اوگرا توقیر صادق کی گرفتاری اور تعیناتی کے ذمہ داران کی نشاندہی کا حکم دیدیا

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) سپریم کورٹ نے سابق چیئرمین اوگرا توقیر صادق اور اُس کی گرفتاری میں رکاوٹ بننے والے افرادکو حراست میں لینے اور سابق چیئرمین کی تعیناتی کے ذمہ داران کی نشاندہی کا حکم دیدیاہے ۔عدالت نے اپنے ریمارکس میں کہاکہ عدالتی فیصلے سے اوگرا کو 36ارب روپے کی بچت ہوئی ہے، نیب کو آج تک جتنی بھی تحقیقات سونپی ہیں ، ایک میں بھی پیش رفت نہیں ہورہی ۔ چیف جسٹس کی سربراہی میں سپریم کورٹ کے فل بن نے منگل کو سابق چیئرمین اوگراتوقیرصادق عملدرآمد کیس کی سماعت کی۔ نیب کے پراسیکیوٹر نے عدالت کو بتایاکہ سابق چیئرمین اوگرا توقیرصادق لاہور میں روپوش ہیں جس پر چیف جسٹس نے کہاکہ وہ جہاں بھی ہیں ، گرفتار کریں ،توقیر صادق کیخلاف قانون کے مطابق کارروائی کریں گے ۔پراسیکیوٹرنیب نے کہاکہ ریفرنس تیار ہے جلد دائر کردیں گے ۔چیف جسٹس نے استفسار کیاکہ توقیر صادق کے تقرر کی سفارش کس نے کی ؟ تقرری کرنیوالوں کیخلاف کیا کارروائی ہوئی ؟کیوں نہیں بتاتے کہ موجودہ وزیراعظم اُس وقت متعلقہ وزیرتھے ۔عدالت کاکہناتھاکہ نیب کا کام کرپشن کاخاتمہ ہے لیکن وہ سپریم کورٹ سے لڑائی کررہاہے ۔عزت اور ذلت اللہ کے ہاتھ میں ہے ، وہی ہر چیزپرقادر ہے ۔چیف جسٹس نے کہاکہ کرپشن ملک کے لیے ناسور بن گیاہے ،ملک بچاناہے تو کرپشن کاخاتمہ کرناہوگا۔جسٹس جواد ایس خواجہ نے پراسیکیوٹر نیب سے کہاکہ لگتاہے آپ کسی کی پشت پناہی کررہے ہیں ۔سپریم کورٹ نے حکم دیاکہ آئی جی پولیس بھی اگر توقیر صادق کو تحفظ دے رہاہے تو اُسے بھی گرفتار کریں ۔عدالت نے سماعت کچھ دیر کے لیے ملتوی کرتے ہوئے رپورٹ طلب کرلی۔سماعت دوبارہ شروع ہونے پر نیب نے اپنی رپورٹ جمع کرادی جسے عدالت نے مسترد کردیا۔ عدالت نے ذمہ داران کی نشاندہی کرنے کا حکم دیتے ہوئے سماعت چار اکتوبر تک ملتوی کردی ۔

مزید :

اسلام آباد -