امریکا کے ساتھ تعلقات ازسر نو ترتیب دینے کی ضرورت ہے،روسی وزیرخارجہ

امریکا کے ساتھ تعلقات ازسر نو ترتیب دینے کی ضرورت ہے،روسی وزیرخارجہ

  

ماسکو(این این آئی) روس نے زور دیا ہے کہ امریکا کے ساتھ تعلقات ازسر نو ترتیب دینے کی ضرورت ہے، شام میں جہادیوں کے خلاف لڑائی میں واشنگٹن انتظامیہ نے دوہرا معیار اپنا رکھا ہے،ر وس کے وزیر خارجہ سیرگئی لاوروف نے ایک انٹرویومیں کہاکہ روس پر مغربی پابندیوں کا باعث بننے والی یوکرائن کی صورتِ حال اب بہتر ہو رہی ہے جس کی وجہ ان کی حکومت کی جانب سے امن کے لیے کیے گئے اقدامات ہیں۔ لاوروف نے مغربی دفاعی اتحاد نیٹو کو بھی تنقید کا نشانہ بنایا ۔ ان کا کہنا تھا کہ نیٹو آج بھی سرد جنگ کے زمانے کی ذہنیت رکھتی ہے۔ انہوں نے امریکا پر تنقید کرتے ہوئے کہا کہ اس نے روس کے اتحادی بشار الاسد کو شام میں اسلامی ریاست کے جہادیوں کے خلاف شروع کی گئی مہم سے علیحدہ رکھا اور یوں اس حوالے سے دوہرے معیار سے کام لیا۔

انہوں نے کہا کہ اب واشنگٹن انتظامیہ دنیا کے کسی بھی حصے میں استغاثہ، جج یا جلاد کا کردار ادا نہیں کر سکتی۔ لاوروف نے کہاکہ ہم بالکل یہ چاہتے ہیں کہ تعلقات معمول پر آ جائیں لیکن تعلقات ہم نے خراب نہیں کیے تھے۔ اب ضرورت اس بات کی ہے جسے امریکی شاید ازسر نو ترتیب کہیں گے۔ انہوں نے کہاکہ امریکا کی موجودہ حکومت آج تعاون کے زیادہ تر ڈھانچے کو تباہ کر رہی ہے جو اس نے ہمارے ساتھ مل کر خود کھڑا کیا تھا۔ ضرورت شاید اس بات کی کہ اب کچھ زیادہ کام کیا جائے، شاید تعلقات کی ازسرنو ترتیب کا مرحلہ نمبر دو یا پھر مرحلہ نمبر دو اعشاریہ صفر۔ روسی وزیر خارجہ سیرگئی لاوروف نے یہ بھی کہا کہ یوکرائن میں صدر ولادیمیر پوٹن کی کوششوں سے حالات بہتر ہو رہے ہیں۔

مزید :

عالمی منظر -