سانحہ لاہور :سابق ایس پی سیکورٹی‘ ایلیٹ کمانڈو احاطہ عدالت سے فرار

سانحہ لاہور :سابق ایس پی سیکورٹی‘ ایلیٹ کمانڈو احاطہ عدالت سے فرار

  

لاہور ( نامہ نگار ) سانحہ ماڈل ٹاﺅن میں گولیاں چلانے والے سابق ایس پی سیکورٹی اور ایلیٹ کمانڈو عبوری ضمانتیں خارج ہوتے ہی جوائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم کے اہلکاروں کی موجودگی میں احاطہ عدالت سے فرار ہو گئے۔ انسداد دہشت گردی کے جج خالد محمود رانجھا نے درخواست ضمانت کی سماعت شروع کی تو وکیل صفائی نے اپنے دلائل میں عدالت کو بتایا کہ ایس پی سلمان علی خان واقع کے وقت پولیس یونیفارم میں اپنی ڈیوٹی کے حوالے سے موقع پر موجود تھے تاہم ان کے خلاف نہ کوئی گواہ ہے اور نہ کسی زخمی نے تفتیش میں بیان قلمبند کروایا ہے جس پر ڈپٹی پراسیکیوٹر جنرل نذیر احمد نے وکیل صفائی کے دلائل پر مخالفت کرتے ہوئے عدالت میں موقف اختیار کیا کہ جوائنٹ انویسٹی گیشن ٹیم نے ویڈیو فوٹیج کے ذریعے سلمان علی خان کو گولی چلاتے دیکھا ہے سلمان علی خان کی گن سے نکلی گولی کس کس کو لگی اس کا تعین کیا جا رہا ہے۔ فاضل جج نے وکلاءکے دلائل سننے کے بعد فیصلہ سناتے ہوئے سابق ایس پی سکیورٹی سلمان خان اور ایلیٹ کمانڈو نثار کی عبوری ضمانتیں خارج کر دیں۔ عدالت کا فیصلہ سنتے ہی دونوں ملزمان عدالت سے فرار ہو گئے۔سماعت کے موقع پر جوائنٹ انویسٹی گیشن کے بیسیوں اہلکار ملزم کو گرفتار کرنے کے لئے موجود تھے جن میں 3 ڈی ایس پیز بھی شامل تھے انکی موجودگی میں مبینہ طور پرملزمان فرار ہونے میں کامیاب ہوئے ہیں۔

مزید :

علاقائی -