پرائیویٹ سکول مالکان کااضافی فیسیں واپس کرنے کے آرڈیننس کیخلاف احتجاجی مظاہرہ

پرائیویٹ سکول مالکان کااضافی فیسیں واپس کرنے کے آرڈیننس کیخلاف احتجاجی ...

لاہور( خبرنگار) پرائیویٹ سکولوں کے مالکان نے آل پاکستان پرائیویٹ سکولز مینجمنٹ ایسوسی ایشن کے مرکزی صدر ادیب جاودانی کی قیادت میں گورنر پنجاب کے پرائیویٹ سکولوں سے متعلق جاری کردہ آرڈی ننس اور وزیر اعظم کے پرائیویٹ سکولوں کے مالکان کو اضافی فیسیں واپس کرنے کے بیان پر ایک احتجاجی مظاہرہ کیا۔ ادیب جاودانی نے مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ گورنر پنجاب نے پرائیویٹ سکولوں کے معاملے پر جو آرڈی ننس جاری کیا ہے وہ آئین و قانون سے متصادم ہے اور بنیادی حقوق کے خلاف ہے یہ آرڈیننس پرائیویٹ سکولوں کو بند کرنیکی ایک سازش ہے۔ ادیب جاودانی نے کہا کہ پنجاب حکومت نے 2014ء میں اس نوعیت کا کوئی آرڈیننس جاری نہیں کیا تھا کہ پرائیویٹ سکولز فیسوں میں کوئی اضافہ نہیں کر سکتے۔ پرائیویٹ سکولوں نے 2014ء میں اپنے سکولوں کے اخراجات پورے کرنے کے لئے مناسب فیسوں میں اضافہ کیا تھا اب پنجاب کے گورنر نے جو آرڈیننس جاری کیا ہے اس کے مطابق پرائیویٹ سکولوں کے مالکان کو 2014ء میں جو فیسوں میں ضافہ کیا ہے وہ فوری طور پر واپس کرنا ہو گا۔ اس آرڈیننس کو جاری کرنے کے مقصد بلدیاتی انتخابات میں عوام کی ہمدردیاں حاصل کرنا ہے تاکہ وہ بلدیاتی الیکشن میں مسلم لیگ ن کو ووٹ دے سکیں۔ پنجاب میں پبلک سیکٹر کے سکولز تباہ ہو چکے ہیں۔ پرائیویٹ تعلیمی اداروں کی وجہ ہی خواندگی کی شرح میں اضافہ ہو رہا ہے لیکن حکومت ان اداروں کی کوئی حوصلہ افزائی نہیں کر رہی ہے۔ پاکستان میں تمام چھوٹے بڑے پرائیویٹ سکولوں کو 23 قسم کے ٹیکس بھی ادا کرنے پڑتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہم فیس میں بیس فیصد سے کم اضافہ کرتے ہیں۔ ملک میں 75 فیصد انرولمنٹ کا اضافہ ہماری کامیابی ہے۔ حکومتی نااہلی کو چھپانے کے لئے ہمیں مافیا کہنا ایک بڑی زیادتی ہے۔ گورنر پنجاب کے جاری کردہ آرڈیننس مجریہ 19-09-2015 کی آئینی حیثیت کو چیلنج کر دیا گیا ہے۔اگر وزیر اعظم کے بیان پر پنجاب حکومت نے اضافی فیسیں واپس نہ کرنے والے پرائیویٹ سکولوں کو سیل کیا تو ہم پنجاب حکومت کے اس فیصلے کو بھی لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کریں گے۔

مزید : صفحہ آخر


loading...