جنگ کسی بھی ملک کے مفاد میں نہیں،دفاع وطن کیلئے پارلیمنٹ، فوج اور عوام ایک ساتھ ہیں:میاں رضا ربانی

جنگ کسی بھی ملک کے مفاد میں نہیں،دفاع وطن کیلئے پارلیمنٹ، فوج اور عوام ایک ...
جنگ کسی بھی ملک کے مفاد میں نہیں،دفاع وطن کیلئے پارلیمنٹ، فوج اور عوام ایک ساتھ ہیں:میاں رضا ربانی

  

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک) چیئرمین سینٹ میاں رضا ربانی نے کہا ہے کہ جنگ کسی بھی ملک کے مفاد میں نہیں ہے، اس کے باوجود اگر جنگ مسلط کی جاتی ہے تو دفاع وطن کیلئے پارلیمنٹ، فوج اور عوام ایک ساتھ ہیں،اگر اقوام متحدہ کی قرارداد پر عراق میں کارروائی ہوسکتی ہے تو پھر کشمیریوں کے موقف پر دہرا معیار کیوں برتا جارہا ہے؟۔

نجی ٹی وی کے مطابق ’’  مزدور کسان پارٹی کے سابق سربراہ فتح یاب علی خان کی برسی کے موقع تقریب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ پاکستان ایک پرامن ملک ہے لیکن کشمیر میں بنیادی حقوق کی خلاف ورزی پر خاموش نہیں رہ سکتے، کشمیریوں کو حق خودارادیت مانگنے کی سزا دی جارہی ہے، مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کی قراردادوں کے مطابق حل ہونا چاہیے، اگر اقوام متحدہ کی قرارداد پر عراق میں کارروائی ہوسکتی ہے تو پھر کشمیریوں کے موقف پر دہرا معیار کیوں برتا جارہا ہے؟ سارک کانفرنس کے التوا پر بات کرتے ہوئے چیئرمین سینیٹ رضا ربانی نے کہا کہ بھارت نے اپنے مفادات کے تحت اسے ملتوی کیا ہے، دیگر ممبر ممالک کو اس حوالے سے سوچنا چاہیئے۔ انہوں نے کہا کہ بدترین جمہوریت ، بہترین آمریت سے بہتر ہے، جمہوریت کی مضبوطی کے لیے پارلمنٹ کا شفاف ہونا ضروری ہے، سینیٹ کو مالیاتی خود مختاری حاصل ہونی چاہئے اور سینیٹ میں ووٹنگ کے عمل پر بھی نظرثانی کرنا ہوگی، مشترکہ اجلاس میں سینیٹ کے صرف سو جبکہ قومی اسمبلی کے تین سو بیالیس ووٹ ہوتے ہیں۔ پارلیمنٹ کا مشترکہ اجلاس موجودہ صورتحال پر غور و فکر کرنے کے لئے بہترین پلیٹ فارم ہے، اس سے بھرپور فائدہ اٹھانا چاہیے۔ رضاربانی نے کہا کہ معروف سیاسی رہنما اور پی آئی آئی اے کے سابق چیئر مین فتح یاب علی خان نے پاکستان میں جمہوریت کی بحالی اور جمہوری استحکام کے لئے مثالی جدوجہد کی اور قید و بند کی صعوبتیں برداشت کرتے ہوئے ہمیشہ حق اور سچ کا علم بلند رکھا۔

مزید :

قومی -