زرعی قرضہ جات اورچھوٹے کاشتکار

زرعی قرضہ جات اورچھوٹے کاشتکار

  

مکرمی! موجودہ حکومت نے جہاں ترقیاتی منصوبہ جات کو پایہ تکمیل تک پہنچایا ہے اس کے ساتھ ہی زرعی شعبہ کو بھی نظر انداز نہیں کیا بلکہ زرعی ترقی او رکسانوں کی خوشحالی کے لیے بہت سارے اقدامات اٹھائے ہیں جبکہ ماضی میں چھوٹے کاشتکار کبھی بھی حکومت کی توجہ کا مرکز نہیں رہے ۔حال ہی میں خادم اعلیٰ پنجاب نے چھوٹے کاشتکاروں کے ساتھ ساتھ مزارعین اور ٹھیکیدار وں کے لیے ربیع اور خریف کی فصلوں کے لیے 25ہزار او ر40ہزار فی ایکڑ بلاسود زرعی قرضوں کی فراہمی کا اعلان کیا ہے جس سے ہم جیسے چھوٹے کاشتکاروں کو مالی معاونت ملے گی اور پیداوار میں اضافہ ہو گا ۔زرعی قرضہ جات کے حصول کے لیے رجسٹریشن کا آغاز بھی ہو چکا ہے لیکن ہماری مشکل یہ ہے کہ مال پٹواری اور رجسٹریشن کا عملہ کاشتکاروں کو بار بار چکر لگواتا ہے ۔میری خادم اعلی پنجاب سے گزارش ہے کہ زرعی قرضہ جات کے اجرا کے طریقہ کار کو شفاف بنانے کے علاوہ رجسٹریشن عملہ کو ہدایات دیں کہ وہ کاشتکاروں سے بھرپور تعاون کریں تا کہ ہم چھوٹے کاشتکاران زرعی قرضوں سے بہتر طورپر فائدہ اٹھا سکیں ۔ (محمدساجدبہاولپور)

مزید :

اداریہ -