تاجر ‘ عوام گھروں کے نقشہ منظوری پر بھاری ٹیکس مسترد کرتے ہیں ‘ خواجہ سلیمان صدیقی

تاجر ‘ عوام گھروں کے نقشہ منظوری پر بھاری ٹیکس مسترد کرتے ہیں ‘ خواجہ سلیمان ...

  

ملتان (سٹی رپورٹر) آل پاکستان انجمن تاجران کے مرکزی چیئرمین خواجہ سلیمان صدیقی نے کہا ہے کہ حکومت پنجاب نے گھروں (بقیہ نمبر8صفحہ12پر )

کی بلڈنگز اور نقشوں کی منظوری کے ساتھ ساتھ زمینوں کی خریداری پر بھار ی ٹیکس عائد کرنے کا جو پروگرام بنایا ہے تاجر برادری اور عوام اسے مسترد کرتے ہیں ، غریبوں سے چھت کا حق بھی چھینا جارہا ہے جس کی ہم پرزور مذمت کرتے ہیں ۔ خواجہ سلیمان صدیقی نے مزید کہا کہ حکومت پنجاب کی جانب سے 3 مرلہ پلاٹ کے اوپر گھر تعمیر کے نقشے کی منظوری کے حوالے سے ساڑھے 12 ہزار روپے ٹیکس ، 5 مرلہ کے پلاٹ پر پونے 2 لاکھ سے زائد ٹیکس اور 10 مرلہ کے پلاٹ پر 3 لاکھ سے زائد ٹیکس وصولی کا حکومت پنجاب نے ٹیکس وصولی کے جن اقدامات کا اعلان کیا ہے وہ دراصل غریبوں کے خلاف گہری سازش اور غریبوں سے جینے کا حق چھیننے کا حکومت پنجاب کا پلان ہے جس کی وجہ سے چھوٹے تاجروں اور عوام میں تشویش کی لہر پائی جارہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پہلے ہی چھوٹے تاجر اور عوام الناس درجنوں قسم کے مختلف ٹیکس ادا کررہے ہیں اور اب تین مرلہ ، پانچ مرلہ اور دس مرلہ مکانات کے تعمیر پر بھی بھاری عائد ٹیکس کرکے حکومت عوام دشمنی کا منہ بولتا ثبوت دے رہی ہے اور اس سے قبل بھی جائیداد کی خرید و فروخت کے حوالے سے بھاری ٹیکس عائد کئے گئے تھے اور سٹامپ پیپرز کی قیمتوں کی شرح بھی کئی سو گنا بڑھادی گئی تھی اور اب غریب عوام کا گلا گھونٹنے کیلئے نئے ٹیکس عائد کرنے کا حکومت پنجاب کا اعلان ظالمانہ اقدام ہے ۔

سلیمان صدیقی

مزید :

ملتان صفحہ آخر -