نوجوان قتل، 5افراد نے خودکشی کر لی، لڑکا حادثے میں چل بسا

نوجوان قتل، 5افراد نے خودکشی کر لی، لڑکا حادثے میں چل بسا

  

خان پور، بگا شیر، لنگر سرائے، راجن پور، میلسی، خانیوال، میاں چنوں، بوریوالہ، لیاقت پور، سلطان کالونی، وہاڑی، جام پور(نمائندگان) ڈاکوؤں نے گھر گھس کر سوئے نوجوان کو فائرنگ کرکے موت کے گھاٹ اتار دیا مختلف واقعات میں 4خواتین اور ایک نوجوان نے خودکشی کر لی 14سالہ لڑکا ٹریفک حادثات میں چل بسا کنویں میں کام کرتا مزدور مٹی کے تودہ تلے دب کر ہلاک ہوگیا دو مزدور کرنٹ لگنے سے دم توڑ گئے خانپور بگاشیر اور لنگر سرائے سے نمائندہ پاکستان کے مطابق یونین کونسل مرادآباد علی ٹاؤن میں 20سالہ نوجوان رانا تجمل حسین ول غلام یٰسین اپنے گھر میں سویا ہوا تھا کہ رات کے ڈیڑھ بجے 3نا معلوم(بقیہ نمبر10صفحہ12پر )

ڈاکو سفید رنگ کی کار میں سوارہو کر آئے اور گھر میں داخل ہو گئے۔ سوئے ہوئے لوگوں کے چہروں سے کپڑے ہٹا کر کسی شخص کی تلاش کررہے تھے کہ اسی اثناء میں رانا تجمل حسین کی آنکھ کھل گئی جس نے نا معلوم ڈاکو کو پکڑنے کی کوشش کی اور مزاحمت پر ڈاکوؤں نے فائرنگ شروع کر دی۔جس کے نتیجے میں رانا تجمل شدید زخمی ہو گیا اور زمین پر گر گیا اور زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے موقع پر جان بحق ہو گیاجبکہ ڈاکو موقع سے فرار ہونے میں کامیاب ہو گئے۔پورے علاقہ میں خوف و حراس پھیل گیا۔پولیس تھانہ صدر مظفر گڑھ کے ایس۔ایچ۔او ادریس خان اور ڈی۔ایس۔پی سٹی بھاری نفری کے ہمراہ موقع پر پہنچ گئے۔لاش کو پوسٹ مارٹم کیلئے ڈسٹرکٹ ہسپتال مظفر گڑھ منتقل کر دیا گیا۔ پولیس نے نا معلوم 3ڈاکوؤں کے خلاف قتل کا مقدمہ درج کر کے ملزمان کی تلاش شروع کر دی۔قیاس کیا جاتا ہے کہ یہ قتل کسی ذاتی دشمنی کاشاخسانہ ہو سکتا ہے۔راجن پور سے ڈسٹرکٹ رپورٹر کیمطابق نواحی علاقہ مہرے والا میں نوجوان لڑکی (ع) نے مبینہ طورپر کا لا پتھر پی کر خودکشی کرلی مقامی پولیس تاحال اس واقعہ سے لاعلم ہے ورثاء نے لاش کو دفنا بھی دیا ہے راجن پور سمیت جنو بی پنجاب بھر میں کا لاپتھر سے خودکشیوں کے واقعات میں روز بروز اضافہ ہورہا ہے حکو مت کواس حوالے سے کردار ادا کر نا چاہیئے ۔میلسی سے نمائندہ پاکستان کیمطابق بتایا گیا ہے کہ چھتانیاں موڑ کی رہائشی نوجوان دوشیزہ مسرت بی بی نے گھریلو ناچاقی سے دلبرداشتہ ہو کر کالا پتھر پی لیا اور اپنے ہاتھوں اپنی زندگی کا خاتمہ کر لیا۔خانیوال سے نمائندہ پاکستان کیمطابق کچاہ کھوہ وہاڑی روڈ پر مسافر پل کے قریب خاتون نے گھریلو حالات سے دلبرداشتہ ہو کر میلسی لنک کینال نہر میں چھلانگ دی ریسکیو ٹیم نے جائے وقوعہ پر پہنچ کر تلاش شروع کردی ہے۔میاں چنوں سے نمائندہ خصوصی کیمطابق گزشتہ شام نواحی گاؤں 67/15Lوجھیانوالا کی رہائشی 18سالہ سمیرا دختر اللہ دتہ اپنی والدہ کے ہمراہ کپاس کی چنائی کے بعد گھر پہنچی تو سمیرا کی والدہ نے کہا کہ میں قریبی ہمسائے کی فوتگی پر اظہار افسوس کر آؤں اور تم رات کے کھانے وغیرہ کا بندو بست کرو مگر کچھ دیر بعد جب وہ واپس آئی تو گھر کا مین دروازہ اندر سے بند پا کر گھر میں موجود سمیرا کو آوازیں دینا شروع کردیں کافی دیر گزرنے کے بعد جب اندر سے آواز نہ آئی تو قریبی ہمسائے کے ایک چھوٹے بچے کی مد د لی گئی جس نے دیوار پھلانگ کر اندر سے دروازے کی کنڈی کھولی تو کمرے میں گارڈر سے لٹکتی ہوئی سمیرا کی جھولتی ہوئی لاش کو پاکر سمیرا کی والدہ کے شور ووایلا سے قریبی ہمسائیوں کی ایک بڑی تعدا وہاں جمع ہو گئی اطلاع ملنے پر مقامی پولیس نے موقع پر پہنچ کر لاش کو نیچے اتار کر معمول کی کارروائی شروع کردی۔ بورے والہ سے تحصیل رپورٹر کیمطابق نواحی گاؤں 453ای بی لاٹ کے رہائشی محمد زبیر کے 20سالہ بیٹے نعیم زبیر نے گھروالوں سے اختلاف کی بنیاد پردل برداشتہ ہوکر گندم میں رکھنے والی زہریلی گولیاں کھالیں جسے فوری طورپرتحصیل ہیڈکوارٹر ہسپتال بورے والا منتقل کیاگیا جہاں سے ڈاکٹروں نے اس کو تشویش ناک حالت کے پیش نظر نشتر ہسپتال ملتان ریفرکردیاجہاں وہ انتقال کرگیا۔ لیاقت پور سے نامہ نگار کیمطابق گزشتہ شب چھوٹا چک بیدی ضلع پاک پتن کا رہائشی نوجوان طارق ولد طالب حسین اپنے بھائی کے ہمراہ فرید ایکسپریس کے ذریعے کراچی جارہا تھا کہ ریلوے سٹیشن پر پانی لینے کے لیے اترا دوبارہ چلتی ٹرین پر سوار ہونے کی کوشش میں ٹرین کے نیچے جا گرااور موقع پر ہی دم توڑ گیا متوفی کے جسم سے بازو اور دیگر اعضاء الگ ہوگئے ریسکیو 1122نے نعش تحصیل ہیڈکوارٹر لیاقت پور پہنچائی آج صبح 6بجے اسکے ورثا میت لینے ہسپتال پہنچے مگر ریلوے پولیس اور ہسپتال انتظامیہ نے دن گیارہ بجے میت ان کے حوالے کی جسم سے الگ ہوئے بازو اور گردن کو ٹانکے لگانے کی بھی زحمت گوارہ نہیں کی اور ٹکڑوں میں بٹی نعش ہی ورثا ء کے حوالے کر کے اور دکھی انسانیت کی خدمت کی ظالمانہ مثال قائم کر دی ہسپتال عملہ کی بے حسی پر ورثاء نے شدید احتجاج کیا ۔سلطان کالونی سے نمائندہ پاکستان کیمطابق سلطان کالونی میانوالی روڈ پر ٹریلر اور موٹر سائیکل میں تصادم موٹرسائیکل سوار چودہ سالا لڑکا موقع پر جان بحق وٹرسائیکل ٹریلر کے نیچے گھس گیا جس سے ڈرائیور ٹریلر روڈ پر کھڑا کرکے فرارہوگیااطلاع ملتے ہی پولیس چوکی سلطان کالونی انچارج ندیم حیدر پریس کلب سلطان کالونی کے صدر جنرل سیکرٹری موقع پر پہنچ کر روڈ بلاک کو کلیر کرواکر ٹریفک بحال کروا دی ادھر حادثے میں جان بحق ہونے والازاہد حفی کے ورثاء نے ٹریلر ڈرائیور کو معاف کردیا جان بحق ہونے والے چودہ سالا زاہد حفیظ ٹیلر ماسٹر تھا گھر سے دوکان پر جارہا تھا اچانک حادثہ پیش آگیا۔ وہاڑی سے بیورو رپورٹ کے مطابق مو ضع کوٹ سورو کا رہائشی 40 سالہ مشتاق نواحی علاقہ 73 ڈبلیو بی میں 22 فٹ گہرے کنوئیں میں مٹی نکالنے کا کام کر رہا تھا کہ اچانک مٹی کا تودا اس کے اورپر آن گرا جس کے نتیجہ میں وہ مٹی کے نیچے دب گیا اطلاع ملنے پر ریسکیو1122 کی ٹیم اور پولیس موقع پر پہنچ گئی اور اہل علاقہ کہ کثیر تعداد بھی موقع پر پہنچ گئی لیکن فوری طور پر مزدور کو کنوئیں سے باہر نہ نکالا جا سکا تاہم ریسکیو1122 کی ٹیم نے مسلسل 7 گھنٹے تک آپریشن کرنے کے بعد نعش کو ریسکیو کر کے ورثاء کے حوالہ کر دی۔جام پور سے نمائندہ خصوصی کے مطابق جام پورکی عرفان آبادکالونی میں ریاض احمدبھٹی کی دکانیں تعمیرہورہی تھی جس پر حمیداللہ اورعبید اللہ محنت مزدوری کی غرض سے کام کررہے تھے جبکہ تعمیرہونے والی دکان کے اوپرسے واپڈاکی 11kvہائی وولٹ لائن گذررہی تھی جس پرکام کرنے والے مزدورنے سریا داٹھاکراوپرکھڑے مستری کو دیا توسریا 11kvسے ٹکراگیاجس سے دھماکہ میں ونوں مزدورشدید زخمی ہوگئے جوہسپتال جانے سے قبل ہی دم توڑگئے دریں اثنا سٹی کونسلرحاجی محمداکرم قریشی،ملک عقیل احمدارائیں ،ملک کریم نوازارائیں ایڈووکیٹ،ملونامحمدیاسین راہی ودیگر نے واپڈاحکام سے شہرمیں جھولتی تاریں اور بوسیدہ کھمبوں سمیت بجلی کانظام درست کرنے کامطالبہ کیاہے۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -