سرکاری اشتہارات میں سیاسی قائدین کی تصاویر لگانا غیر قانونی نہیں ، شہباز شریف کی سپریم کورٹ میں درخواست دائر

سرکاری اشتہارات میں سیاسی قائدین کی تصاویر لگانا غیر قانونی نہیں ، شہباز ...

  

 اسلام آباد (سٹاف رپورٹر،مانیٹرنگ ڈیسک ،نیوز ایجنسیاں ) سپریم کورٹ میں سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف نے سرکاری اشتہاری مہم میں سیاسی لیڈران کی تشہیر کے معاملے میں درخواست دائر کر دی جس میں موقف اپنایاگیاہے کہ گزشتہ دو سال میں خیبرپختونخوا اور سندھ کی حکومتوں نے قائدین کی تصاویر والے اشتہارات جاری کئے، قانون اور قواعد کے تحت اشتہارات میں تصاویر لگانے پر ممانعت نہیں، سابقہ پنجاب حکومت کی اشتہاری مہم نیک نیتی پر مشتمل تھی۔ پیر کو سپریم کورٹ میں سابق وزیراعلیٰ شہباز شریف نے ایڈووکیٹ شاہد حامد اور ایڈو و کیٹ عائشہ حامد کے ذریعے درخواست دائر کی ، درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ پاکستان میں کئی دہائیوں سے اشتہارات میں وزیرا عظم، وزرائے اعلیٰ اور صدور کی تصاویر لگائی جاتی ہیں،شہباز شریف نے درخواست میں پنجاب کے علاوہ دیگر صوبوں کے سرکاری اشتہا ر ا ت کا حوالہ دیتے ہوئے موقف اختیار کیا کہ گزشتہ سال 12نومبر کو کے پی حکومت نے جنگلات، ماحولیات کا اردو اخبار میں فل بیچ اشتہار دیا ، تحریک انصاف کی سابقہ حکومت کے اشتہار میں وزیراعلیٰ کے پی اور صدر پی ٹی آئی کی تصاویر تھیں، گزشتہ دو سال میں خیبرپختونخوااور سندھ کی حکومتوں نے قائدین کی تصاویر والے اشتہار جاری کئے ، اشتہار کے ذریعے خود پارٹی کو فائدہ نہیں پہنچایا۔

شہباز درخواست

مزید :

صفحہ اول -