نشتر ہسپتال 600سے زائد کنٹریکٹ ملازمین کو ملازمت پر بحال کرنیکا حکم

نشتر ہسپتال 600سے زائد کنٹریکٹ ملازمین کو ملازمت پر بحال کرنیکا حکم

  

ملتان ( خبر نگار خصوصی)لاہور ہائیکورٹ ملتان بنچ نے نشتر ہسپتال سے نکالے گئے 600 سے زائد کنٹریکٹ ملازمین کو ملازمت پر بحال کرنے کا حکم دیا ہے۔ فاضل عدالت میں ملتان کی تنزیلہ ہما سمیت 50مختلف درخواستوں کے ذریعے کنٹریکٹ ملازمت سے نکالے جانے والے ملازمین نے موقف اختیار کیا تھا کہ انہیں لیبارٹری سمیت دیگر شعبوں میں امتحانی ٹیسٹ اور انٹرویو کے بعد تعینات کیا گیا لیکن 7اگست 2018ء کو بلاسماعت و موقف لئے بغیر(بقیہ نمبر11صفحہ12پر )

نوکری سے برخاست کرتے ہوئے حاضری لگانے سے بھی روک دیا گیا ہے۔ عدالت کے طلب کرنے پرکونسل ملک محمد اسلم و ایم ایس ڈاکٹر عبدالحفیظ اور ڈائریکٹر فنانس عبدالغفار ملک بھی پیش ہوئے جن سے استفسار کے بعد عدالت نے فیصلہ سنایا کہ رٹ گزاروں کو سماعت کا موقع دیئے بغیر نوٹس نوکری سے برخاست کردیا گیا لہٰذا تمام رٹ گزاروں کو 01-10-18سے ڈیوٹی جوائن کرنے کے بعد تمام گزشتہ تنخواہیں ادا کی جائیں اور اس دوران انکوائری کمیٹی اپنی کارروائی جاری رکھے اور تمام ملازمین کی اسناد اور اہلیت کو چانجے اور اگر مطلوبہ اہلیت پر پورا نہیں اترتے تو سماعت کا موقع انکوائری سے برخاست کرسکتی ہے اور دیگر کوئی اتھارٹی بھی اس معاملے کی انکوائری کرنا چاہے تو یہ حکم رکاوٹ نہیں ہوگا۔

مزید :

ملتان صفحہ آخر -