ملک کے دیگر علاقوں کی طرح ضلع نوشہرہ میں بھی بزرگوں کا عالمی دن منایا گیا

ملک کے دیگر علاقوں کی طرح ضلع نوشہرہ میں بھی بزرگوں کا عالمی دن منایا گیا

  

نوشہرہ (بیورورپورٹ)ملک کے دیگر علاقوں کی طرح ضلع نوشہرہ میں بھی بزرگوں کا عالمی دن منایا گیا ۔ برزگوں نے پلے کارڈ اور بینرز اُٹھار کھے تھے جس پر بزرگوں کے حقوق کے نعرے درج کئے گئے تھے ۔ نوشہرہ کے تمام یونین کونسلوں سے بزرگ افراد نے کثیر تعداد میں شرکت کی۔ اس موقع پر بزرگ دوست تنظیمات کے چئیرمین میاں شاکر حسین عرف شاکر بابا نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ بزرگ اور معمر افراد ملک کا قیمتی سرمایہ ہے ہمیں چاہیے کہ ہم بزرگ افراد کو نظر انداز کرنے کے بجائے اُن کے قیمتی اور مفید مشوروں پر عمل کرکے کامیابی کے سیڑھیوں کو پار کرسکے۔ ان خیالات کا اظہار اُنہوں نے بزرگوں کے عالمی دن کے موقع پر تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا تقریب سے چیف گیسٹ شمع گھی مل GMودود صاحب نے اور DO 1122عمران ، سماجی کارکن اجمل خان ، حاجی ثمین خان ، وقار احمد ایڈوکیٹ ، خیر الاابرار سماجی کارکن الحاج شیر شاہ نے بھی بزرگوں کے حقوق پر روشنی ڈالتے ہوئے کہا کہ اس وقت ملک میں بزرگ شہری سینئر سیٹیزن ایکٹ جو کہ صوبائی اسمبلی سے پاس کیا گیا ہے اس کو عملی جامہ پہنانے کی اشد ضرورت ہے کیونکہ یہ قانون معاشرے اس طبقے کیلئے ہے جو کہ انتہائی نظرانداز طبقہ ہے اور ہر حکومت نے اس طبقے کو نظر انداز کیا ہے ، ہمیں چاہیے کہ بحیثیت قوم اس طبقے کا عزت و احترام اپنا اخلاقی ، مذہبی اور قومی فریضہ سمجھی ۔ اُنہوں نے مزید کہا کہ 2014میں بزرگوں کے حقوق کا جو بل پاس ہو گیا ہے ، اس پر کسی قسم کا عمل درآمد نہ ہو سکا ۔ حکومت کو چاہیے کہ وہ بزرگوں کے حقوق کیلئے عملی اقدامات اُٹھائیں۔ اور محکمہ سوشل ویلفیئر کو منسٹر دیا جائے تاکہ بزرگوں کے حقوق کیلئے عملی کام کیا جاسکے KPKکے 28لاکھ بزرگ اپیل کرتی ہے کہ ہمارے بزرگوں کے حقوق کیلئے سوچا جائے اور بزرگ شہری کارڈ جاری کیا جائے۔

مزید :

پشاورصفحہ آخر -