فورم سید علی گیلانی کی مجلس شوریٰ کے اجلا س میں مقبوضہ کشمیر کی تازہ ترین صورتحال پر غور و خوص کیا گیا

فورم سید علی گیلانی کی مجلس شوریٰ کے اجلا س میں مقبوضہ کشمیر کی تازہ ترین ...

سرینگر(اے پی پی) بزرگ حریت رہنماء سید علی گیلانی کی سرپرستی میں قائم فورم کی مجلس شوریٰ کے اجلاس میں مقبوضہ کشمیر کی صورتحال اورتحریک آزادی کشمیر کے حوالے سے تازہ ترین صورتحال پر غور و خوص کیا گیا۔ کشمیرمیڈیا سروس کے مطابق مجلس شوریٰ کا اجلاس فورم کے سیکریٹری جنرل غلام نبی سمجھی کی صدارت میں راجباغ میں منعقد ہوا۔ اجلاس میں بھارتی حکومت اور اسکی مقامی کٹھ پتلی انتظامیہ کی طرف سے سید علی گیلانی کی مسلسل گھر میں نظربندی پر شدید تشویش ظاہر کرتے ہوئے اسے انسانی حقوق کی بدترین پامالی قراردیا۔

اجلاس میں کہا گیا کہ پولیس انتظامیہ نہ توسیدعلی گیلانی کی رہائش گاہ کو سب جیل کا درجہ دے رکھا ہے اور نہ ہی وہ ان کی نظربندی کو سرکاری طورپر تسلیم کرتی ہے۔

انہوں نے مسلسل نظربندی کی وجہ سے بزرگ رہنماء کی صحت بری طرح متاثر ہونے کا اندیشہ لاحق ہوگیا ہے جس کی تمام تر ذمہ داری ریاستی انتظامیہ پر عائدہوگی۔ اجلاس میں کہاگیا کہ کٹھ پتلی انتظامیہ نظربندوں سے متعلق قوانین کی توہین کی مرتکب ہوکر اپنے ہی تسلیم شدہ قوانین وضوابط کی دھجیاں اُڑارہی ہے۔ ایک طرف عدالتیں نظربندوں کی رہائی کاا حکمات صادر کرتی ہیں اور دوسری طرف انہیں بے بنیاد الزامات میں ملوث کر کے مسلسل حبس بے جا میں قید رکھنے کی پالیسی پر عمل جاری ہے۔ اجلاس میں پرامن سیاسی جلسوں اور میٹنگز پر طاقت کے وحشیانہ استعمال کی شدید ترین الفاظ میں مذمت کی گئی۔ اجلاس میں کہا گیا کہ جموں وکشمیرکے طول وارض میں نوجوانوں کی پکڑ دھکڑ کا سلسلہ دراز کردیا گیا ہے۔ سرینگر کے پائین شہر میں نوجوانوں کی زندگی اجیرن بنادی گئی ہے۔ اجلاس میں آر ایس ایس اور دیگر فرقہ پرست قوتوں کی طرف سے بھارت میں مسلمانوں کی آبادی کی شرح میں اضافے پر شوروغوغا کو بے معنی قرار دیتے ہوئے مسلمانوں کے خلاف زہر یلے پروپیگنڈے پر انتہائی افسوس ظاہر کیا گیا۔

مزید : عالمی منظر