سیاسی مخالفین کو زہریلے انجکشن سے قتل کرواتا تھا ،عباسی شہید ہسپتال کے ڈائریکٹر فنانس کا اعتراف

سیاسی مخالفین کو زہریلے انجکشن سے قتل کرواتا تھا ،عباسی شہید ہسپتال کے ...

کراچی (خصوصی رپورٹ) انسداد دہشت گردی کی عدالت نے رینجرز کے ہاتھوں تین ماہ قبل گرفتار ہونے والے عباسی شہید ہسپتال کراچی کے ڈائریکٹر فنانس فرید الدین کو 14دن کے جسمانی ریمانڈ پر پولیس کے حوالے کر دیا۔ پولیس رپورٹ کے مطابق ملزم علاج یا ایمرجنسی میں آنے والے سیاسی مخالفین کو طبی سہولت فراہم کرنے کے بجائے زہریلے انجکشن لگوا کر قتل کرواتا تھا۔ رینجرزاور دیگر اداروں کی ملزم سے تفتیش کے بعد تیار کردہ رپورٹ میں کہا گیا ہے کہ ملزم نے اعتراف کیا ہے کہ اس نے جعلی ڈگری کے ذریعے ملازمت حاصل کی۔ وہ علاج یا ایمرجنسی میں آنے والے سیاسی مخالفین کو طبی سہولت فراہم کرنے کے بجائے زہریلے انجکشن لگوا کر قتل کرواتا تھا۔ رپورٹ کے مطابق فرید الدین خواتین ڈاکٹرز اور نرسوں کوحراساں کر کے زیادتی کا نشانہ بناتا تھا اور جو خواتین ڈاکٹرز اور نرسنگ سٹاف تعاون نہیں کرتیں ملزم ان کی تنخواہیں روک کر انھیں بلیک میل کرتا تھا۔واضح رہے کہ رینجرز نے تین ماہ قبل عباسی شہید ہسپتال پر چھاپہ مار کر ڈائریکٹر فنانس فریدالدین کو حراست میں لیا تھا۔ فرید الدین کو رینجرز نے انسداد دہشت گردی کورٹ میں پیش کیا اور 90 دن کی تحویل کی استدعا کرتے ہوئے بتایا کہ ملزم سے بھتہ خوری، قتل اور دہشت گردوں کی مدد کرنے کی تحقیقات کرنی ہے۔ عدالت نے ملزم کو 90 دن کے لیے رینجرز کے حوالے کیا تھا۔ قانون نافذ کرنے والے اداروں نے ملزم کی نشاندہی پر رضویہ تھانے کی حدود کھجی گراونڈ کے قبرستان سے بھاری تعداد میں اسلحہ بھی برآمد کیا تھا ۔ 90 دن مکمل ہونے کے بعد عدالت نے ملزم کو ریمانڈ پر پولیس کی تحویل میں دے دیا۔ رضویہ پولیس ملزم کو ستمبر میں دوبارہ عدالت پیش کرے گی۔

مزید : صفحہ اول