پنجاب اسمبلی، گیس کی قیمتوں میں اضافہ پر اپوزیشن کا احتجاج

پنجاب اسمبلی، گیس کی قیمتوں میں اضافہ پر اپوزیشن کا احتجاج

لاہور( نمائندہ خصوصی)پنجاب اسمبلی میں گیس کی قیمتوں میں اضافے پر آؤٹ آف ٹرن قرارداد پیش کرنے کی اجازت نہ ملنے پر اپوزیشن سراپا احتجاج بن گئی، اپوزیشن لیڈر نے کہا کہ حکومت نے سردی کی آمد سے قبل فرٹیلائزر کیلئے 63،صنعتوں کیلئے 22 جبکہ گھریلو صارفین کیلئے 13فیصد گیس مہنگی کردی۔پنجاب اسمبلی کا اجلا س قائم مقام سپیکر سردار شیر علی گورچانی کی زیر صدارت گزشتہ روز ایک گھنٹہ30منٹ کی تاخیر سے شروع ہوا،اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے اپوزیشن لیڈر کا کہنا تھا کہ حکومت گیس کی قیمتوں میں اضافہ کا اقدام واپس لے۔وزیر قانون نے راناثناللہ کا ایوان میں کہنا تھا کہ گیس قیمتوں میں کمی کی قرارداد باضابطہ طور پر اسمبلی میں پیش کی جائے تو اس پر غور کیا جائے گا۔اجلاس میں مفاد عامہ کی6 قراردادیں پیش کی گئیں جن میں سے طارق محمود باجوہ ،محمد سبطین خان کی قراردادیں نمٹادی گئیں جبکہ سردار شہاب الدین خان کی قرارداد پر وزیر قانون رانا ثنا اللہ خان نے کہا کہ اس میں کوئی شک نہیں کہ سرائیکی شاعر شاکر شجاع آبادی بڑے شاعر ہیں اور ہماری اطلاعات کے مطابق محکمہ کی طرف سے ان کی فیملی کو 25ہزار روپے گزارہ الاؤنش ماہانہ دیا جارہا ہے جبکہ ان کی فیملی کو دس لاکھ روپے اس کے علاوہ علاج کے لئے بھی دیتے گئے ہیں۔ میاں اسلم اقبال نے ایوان میں قرارداد پیش کرتے ہوئے کہا کہ ملک میں دہشتگردی کی سر گرمیوں کی بھرپر مذمت کی جاتی ہے اوردہشتگرد عناصر کے خلاف لڑنے والے اداروں اور شخصیات کی خدمات کوخراج عقیدت پیش کرتا ہوں ۔ اس ایوان کی رائے ہے کہ دہشتگردی کے واقعات میں وطن عزیز کے لئے جان قربان کرنے والی شخصیات کو سرکاری طو رپر شہید کے لقب سے پکارا جائے ۔ نیز دہشت گردی کی جنگ میں شہید ہونے والے ارکان اسمبلی یا دیگر سیاسی شخصیات کے لواحقین کو انہی مراعات سے نوازا جائے جو سکیورٹی فورسز کے شہید ہونے والی شخصیات کے ورثاء کو دی جاتی ہیں۔ اس کے جواب میں رانا ثنا اللہ خان نے اعتراض کرتے ہوئے کہا کہ میں ان کی قرارداد کے پہلے حصے کوتسلیم کرتا ہوں جہاں تک دوسرے حصے کا سوال ہے تو اس پر عمل نہیں ہو سکتا کیونکہ سیاسی لوگوں ‘ صحافیوں اور دیگر کاروباری شخصیات بھی ایسا ہی مطالبہ کریں گی لہٰذا ان کو اس زمرے میں شامل کرنا مناسب نہیں البتہ ان کے لواحقین کی حیثیت کو دیکھ کر ان کی مدد کی جا سکتی ہے جس پر سپیکر نے قرارداد نمٹا دی ۔وقفہ سوالات میں وزیر زکوۃ و عشر ملک ندیم کامران نے سوالات کے جوابات دئیے ۔ا یجنڈے کی کارروائی مکمل ہونے پر اجلاس آج صبح دس بجے تک کیلئے ملتوی کر دیاگیا۔

مزید : صفحہ آخر