کینیڈین حکومت نے چین کے پاس ایسی درخواست جمع کرادی کہ امریکہ کی ہوائیاں اڑگئیں، اب امریکہ کینیڈا پر اثر انداز نہ ہوسکے گا کیونکہ۔۔۔

کینیڈین حکومت نے چین کے پاس ایسی درخواست جمع کرادی کہ امریکہ کی ہوائیاں ...
کینیڈین حکومت نے چین کے پاس ایسی درخواست جمع کرادی کہ امریکہ کی ہوائیاں اڑگئیں، اب امریکہ کینیڈا پر اثر انداز نہ ہوسکے گا کیونکہ۔۔۔

  

اوٹاوا (نیوز ڈیسک)چین نے عالمی معیشت میں قائدانہ کردار ادا کرنے کی جانب ایک اہم قدم اٹھاتے ہوئے ایشین انفراسٹرکچر انویسٹمنٹ بینک (AIIB)کی بنیاد رکھی تو امریکہ کو اپنی معاشی طاقت خطرے میں آنے لگی اور اس نے اپنے زیر اثر ممالک کو اس بینک سے دور رکھنے کی کوششیں شرع کردیں۔ امریکی اثر و رسوخ کے تحت کچھ ممالک تو AIIBکا حصہ نہیں بنے لیکن اب امریکہ کو ایک بہت بڑا جھٹکا لگ گیا ہے کیونکہ اس کے قریبی اتحادی ملک کینیڈا نے چینی بینک کا حصہ بننے کے لئے باقاعدہ درخواست جمع کروا دی ہے۔

گلوبل نیوز کی رپورٹ کے مطابق چین نے 100 ارب ڈالر (تقریباً 100 کھرب پاکستانی روپے) کے سرمائے سے نئے بینک کی بنیاد گزشتہ سال رکھی جس کا مقصد خطے کے ممالک کو ٹرانسپورٹیشن، پاور اور ٹیلی کمیونیکیشن جیسے شعبوں میں بڑے پراجیکٹس کے لئے سرمایہ کاری فراہم کرنا تھا۔ اگرچہ امریکہ اسے اپنے معاشی غلبے کے لئے ایک خطرہ سمجھتا ہے اور اپنے اتحادی ممالک کو اس بینک کا حصہ بننے سے روکنے کی ہر ممکن کوشش کررہا ہے مگر کینیڈا کے وزیراعظم جسٹن ٹروڈو نے چین کے وزیراعظم لی کیکیانگ سے ہونے والی ملاقات کے بعد اپنے ملک کو اس نئے بینک کے ارکان ممالک میں شامل کرنے کے لئے درخواست جمع کروا دی ہے۔

’اب ہم امریکہ کے چپے چپے کو اپنے ایٹمی میزائلوں کے ذریعے نشانہ بناسکتے ہیں‘ امریکہ کے سب سے بڑے دشمن ملک کا ایسا اعلان جس نے امریکیوں کی نیندیں اڑادیں

کینیڈین حکومت کا کہنا ہے کہ یہ فیصلہ کینیڈا کی کمپنیوں کو نئے کاروباری مواقع فراہم کرے گا۔ کینیڈا نے یہ کہہ کر امریکہ کے لئے مزید پریشانی پیدا کردی ہے کہ اس کے خیال میں ایشین انفراسٹرکچر انویسٹمنٹ بینک صرف کینیڈین معیشت کے لئے ہی سود مند ثابت نہیں ہوگا بلکہ یہ عالمی معیشت پر بھی اہم ترین اثرات چھوڑے گا۔

واضح رہے کہ چینی قیادت میںقائم کیا جانے والا یہ بینک بنگلہ دیش، انڈونیشیا، تاجکستان اور پاکستان جیسے ممالک میں پہلے ہی 50 کروڑ ڈالر (تقریباً 50 ارب پاکستانی روپے) کی سرمایہ کاری کرچکا ہے جبکہ 10 سے 15 ارب ڈالر کی مزید سرمایہ کاری اگلے پانچ سال کے دوران متوقع ہے۔

مزید : بین الاقوامی