قومی یکجہتی کے لیے پاکستان کا کاروباری طبقہ رول ماڈل کی حیثیت رکھتا ہے

قومی یکجہتی کے لیے پاکستان کا کاروباری طبقہ رول ماڈل کی حیثیت رکھتا ہے

لاہور( کامرس رپورٹر)قومی یکجہتی کے لیے پاکستان کا کاروباری طبقہ رول ماڈل کی حیثیت رکھتا ہے سرمایہ کاری لانے اقتصادی ترقی کے میگا پراجیکٹس مکمل کر ا نے اور معاشی سرگرمیاں بڑھانے کے لیے فیڈریشن ملک بھر کے چالیس سے زیادہ ایوانہائے صنعت وتجارت اور سینکڑوں صنعتی وتجارتی ایسوسی ایشنیں یک زبان و ہم قدم ہو کر حکومت کے ساتھ ہیں۔ لاہور چیمبر کے سابق سینئرنائب صدر ملک طاہر جاوید نے گزشتہ روز چیمبر الیکشن کے سلسلے میں صنعتکاروں کے ایک گروپ سے ملاقات میں کہا ہے کہ لاہور چیمبر ایک جمہوری ادارہ ہے اس کے الیکشن میں حصہ لینا ہر ممبر کا حق ہے تاہم انہوں نے کہا کہ اس میں خوبصورتی یہ ہے کہ الیکشن مکمل ہونے کے بعد کامیاب اور ناکام تمام ممبران شیر و شکر ہو کر کاروباری سرگرمیاں بڑھانے کے عمل میں شریک رہتے ہیں ملک طاہر جاوید نے اس موقع پر کہا ہے کہ بعض سیاست دان یکجہتی کے نام پر حکومت گرانے اور ترقیاتی منصوبوں کی تکمیل میں روڑے اٹکانے کی بجائے اقتصادی ترقی کا راستہ روکنے کے لیے مودی الطاف اتحاد کو ناکام و بے اثر بنانے کی فکر کریں ملک طاہر جاوید نے کہا ہے کہ الطاف اور اس کے شاگردوں نے تیس سال کے عرصہ میں پاکستان کی اقتصادی شہ رگ کراچی کولہو لہان کیا ٹارگٹ کلنگ اور بھتہ خوری کے لیے بزنس کمیونٹی کے ہزاروں افراد کو موت کے گھاٹ اتارا اور کاروبار تباہ کیے اس لیے انہوں نے کہا ہے کہ برطانیہ سے درخواستیں کرنے کے ساتھ ساتھ اندرون ملک عدلیہ کے ذریعہ اسے ملک سے غداری کا مرتکب قرار دلایا جائے

اور برطانیہ سمیت تمام ملکوں کو فیصلہ سے آگاہ کیا جائے ملک طاہر جاوید نے کہا ہے کہ کراچی اور حیدر آباد میں الطاف کے پیدا اور پرورش کردہ زہریلے جراثیم مکمل طور پر ختم کرنے کا بندوبست کیا جائے اس موقع پر صنعتکاروں نے بزنس کمیونٹی کے اتحاد کو مزید مضبوط بنانے کا عہد کیا

مزید : کامرس