ایجوکیشن راؤنڈاپ

ایجوکیشن راؤنڈاپ

پروفیسر قاضی اکرم بشیر

سالِ اول کے داخلوں کی تکمیل اور نئے تعلیمی سال کا آغاز

سال اول کے داخلوں کے لئے دوسری اور تیسری میرٹ لسٹ آویزاں ہونے کے بعد اس ہفتے کے دوران داخلے مکمل ہو جائیں گے اور ستمبر کے پہلے ہفتے سے تعلیمی اداروں میں نئے تعلیمی سال کا آغاز ہو جائے گا۔

موسم گرما کی طویل تعطیلات کے بعد جب طلبا و طالبات کالجز میں آئیں گے تو اس امر کی ضرورت ہو گی کہ تعلیمی اداروں میں عدم دستیاب سہولتوں کی فراہمی کی جائے اس سلسلے میں بنیادی ذمہ داری سربراہانِ ادارہ پر عائد ہوتی ہے کہ وہ اس امر کا جائزہ لیں کہ اداروں میں وہ تمام سہولیات فراہم کی جائیں جو تعلیمی و تدریسی عمل کی تکمیل کے لئے ضروری ہیں۔

کلاسوں کی باقاعدگی کے لئے ضروری اقدامات

سربراہان ادارہ کو کالج ٹائم ٹیبل کے مطابق ذاتی طور پر دو یا تین پیریڈز کو چیک کرنا چاہئے اور کلاسوں کی باقاعدگی پر توجہ دینا ہو گی۔ ہمارے علم میں یہ بات آئی ہے کہ بعض صدور شعبہ اور سینئر اساتذہ بھی باقاعدگی سے کلاسیں نہیں لیتے پرنسپل صاحبان کو ورکنگ آورز کے دوران صدور شعبہ اور دیگر کمیٹیوں کی بہت زیادہ میٹنگز بھی نہیں کرنی چاہئیں تاکہ وہ عوام الناس اور والدین کو دستیاب ہو سکیں اور صدور شعبہ بھی اپنے دفاتر میں رہ کر اپنے دیگر فرائض منصبی کی طرف توجہ دیں اور اگر نظام الاوقات میں ان کی کلاسز ہوں تو وہ اپنی کلاسز لے سکیں۔

نئے تعلیمی سال میں ہم نصابی

سرگرمیوں کا آغاز

گورنمنٹ کالج یونیورسٹی کا مجلہ ’’راوی‘‘ جلد منظر عام پر آنے والا ہے اس طرح گورنمنٹ کالج آف سائنس وحدت روڈ کا مجلہ دبستان بھی اشاعت کے مراحل میں ہے۔ بعض کالجوں میں وزیر اعلیٰ تقریری مقابلوں اور مباحثوں کا بھی انعقاد کیا جا رہا ہے ہم نصابی سرگرمیاں طلباء و طالبات کی خوابیدہ صلاحیتوں کو اجاگر کرتی ہیں اور ان کی شخصیت میں وقار اور اعتماد پیدا کرتی ہیں۔

کالجوں اور یونیورسٹیوں میں تحقیق کا پست معیار

ہمارے پوسٹ گریجویٹ کالجز اور یونیورسٹیوں میں ایم فل اور پی ایچ ڈی کی سطح پر تحقیق کا معیار زیادہ بلند نہیں ہو سکا اور بعض اساتذہ بھی ریسرچ سکالرز کی حد سے زیادہ حوصلہ افزائی کرتے ہیں۔ اگرچہ محکمہ ہائر ایجوکیشن میں اعلیٰ گریڈز کے حصول کے لئے ایم فل اور پی ایچ ڈی ضروری ہے لیکن اس امر کی ضرورت یہی ہے کہ تحقیق کے معیار کو بہتر بنایا جائے اور سکالرز کی بے جا حوصلہ افزائی نہ کی جائے بلکہ انہیں تحقیق کا حقیقی شعور پیدا کیا جائے اور جس موضوع پر وہ مقالہ جات لکھ رہے ہیں اس موضوع میں بھی ان کی گہری دلچسپی ہونی چاہئے۔

محکمہ ہائر ایجوکیشن میں اعلیٰ عہدوں پر تعیناتیوں کی ضرورت

محکمہ ہائر ایجوکیشن میں گورنمنٹ ایم اے او کالج گورنمنٹ دیال سنگھ کالج، گورنمنٹ شالیمار کالج اور گورنمنٹ کالج سبزہ زار لاہور کے پرنسپلوں کی آسامیاں کافی عرصے سے خالی چلی آ رہی ہیں اور ان آسامیوں پر اب تک کوئی باقاعدہ تقرر نہیں کئے گئے۔ اسی طرں ڈائریکٹر ایجوکیشن کالجز لاہور ڈویژن رانا نسیم اختر انجم بھی ایک طویل عرصہ اس عہدے پر فائز رہنے کے بعد 13 اگست کو ریٹائر ہو گئے ہیں۔ اس عہدے کے بے شمار امیدوار ہیں جن کے انٹرویوز کئے جا رہے ہیں۔ ضرورت ہے کہ کسی سینئر اور قابل النسان کو اس عہدے کے لئے منتخب کیا جائے تاکہ معاملات کو بہتر انداز میں چلایا جا سکے۔

مزید : ایڈیشن 2


loading...