طورخم اور چمن بارڈر پر لینڈ پورٹ بنانے کا اعلان

طورخم اور چمن بارڈر پر لینڈ پورٹ بنانے کا اعلان

پشاور( صباح نیوز)وفاقی وزیر صنعت و تجارت خرم دستگیر نے طورخم اور چمن بارڈر پر جلد لینڈ پورٹ بنانے کا اعلان کردیا۔خیبر پختونخوا کے ایوان صنعت و تجارت میں خطاب کے دوران خرم دستگیر کا کہنا تھا کہ لینڈ پورٹ کے قیام سے پاکستان اور افغانستان کے درمیان تجارت میں آسانی ہوگی۔انہوں نے کہا کہ 2 سال افغانستان کو ترجیحی تجارت کی پیشکش کرچکے ہیں لیکن کوئی جواب نہیں ملا، جبکہ ملکی تجارت کے فروغ کے لیے رواں سال مختلف ممالک میں 36 نئے کمرشل آتاشی تعینات کیے گئے ہیں۔ملک میں توانائی بحران کے حوالے سے وفاقی وزیر صنعت و تجارت کا کہنا تھا کہ گزشتہ تین سالوں کے دوران ملک میں توانائی کے بحران میں کمی آئی ہے، پاک ۔ چین اقتصادی راہداری کے منصوبے میں 75 فیصد توانائی کے منصوبے ہیں، جبکہ بجلی کے ٹیرف کے حوالے سے نیشنل ٹیرف کمیشن کا قیام عمل میں لایا گیا ہے۔اسٹریٹیجک ڈویلپمنٹ پالیسی کے نفاذ کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ یہ پالیسی یکم ستمبر سے نافذ العمل ہوگئی ہے ۔وفاقی وزیرکا کہنا تھا کہ نیشنل ٹیرف کمیشن کے قیام سے ملک میں توانائی بحران میں کمی آئی ہے، جبکہ پاک چائنہ کاریڈور میں 40ارب ڈالرمیں 75فیصد توانائی کے منصوبے ہیں

مزید : علاقائی


loading...