پاکستان اور افغانستان کے درمیان دوستی کے علاوہ کوئی دوسرا آپشن نہیں ، سراج الحق

پاکستان اور افغانستان کے درمیان دوستی کے علاوہ کوئی دوسرا آپشن نہیں ، سراج ...

 تیمرگرہ ( بیو ر و رپو ر ٹ ) امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے کہا ہے کہ پاکستان اور افغانستان کے درمیان دوستی کے علاوہ کوئی دوسرا آپشن نہیں افغانستان میں امن کے لئے مخلصانہ کوششوں کی ضرورت ہے سی پیک منصوبہ میں ملاکنڈ ڈویژن اور چترال راستہ پر متبادل روٹ بنایا جائے اور سی پیک منصوبہ میں خیبر پختون خواہ کے ساتھ نا انصافی بر داشت نہیں کی جائیگی ا ن خیالات کا اظہار انہوں نے ابائی علاقہ ثمرباغ لوئر دیر میں مختلف وفود اور میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کیا سراج الحق نے کہا کہ حکومت افغان مہاجرین کو زبردستی پاکستان سے نکالنے سے گریز کرئے کیونکہ افغان مہاجرین بین الاقوامی معاہدہ کے تحت پاکستان میں رہ رہے ہے اور حکومت کو بین الاقوامی قوانین کا احترام کرنا چاہیے انہوں نے کہا کہ پاکستانی سکولوں میں زیر تعلیم افغان طلبہ کو سکولوں سے بے دخل کرنا انسانی حقوق کی خلاف ورزی ہے اور افغان مہاجرین کوپاکستان سے زبردستی نکالنے سے پاکستان کے 35سالہ مہمان نوازی کے ثمرات ضائع ہو رہے ہے سراج الحق نے کہا کہ ملاکنڈ ڈویژن کے عوام نے پاکستان کے لئے قربانیاں دی ہے لہذا مرکزی حکومت خیبر پختون خواہ اور خصوصاً ملاکنڈ ڈویژن کو سی پیک منصوبہ کے ترقی میں شامل کر کے غربت کے خاتمہ کے لئے چترال راستے پر متبادل روٹ بنایا جائے کیونکہ تاجکستان و اخان سے 35کلو میٹر کے فاصلے پر واقع ہے اور مذکورہ روٹ بن جانے سے تاجکستان تک رسائی ممکن ہو جائیگی انہوں نے کہا کہ سی پیک میں منصوبہ میں خیبر پختون خواہ کے ساتھ نا انصافی بر داشت نہیں کی جائیگی اور سی پیک میں ایک علاقہ کو ترقی کا تاثر نہیں دینا چاہیے انہوں نے کہا کہ حکومت پاکستان چائینہ حکومت کی طرز پر سی پیک منصوبہ میں پاکستان کے غریب اور پسماند ہ علاقوں کو شامل کر کے انہیں ترقی دی جائے ۔۔۔

مزید : کراچی صفحہ اول