آئس لینڈ میں لکھا گیاخط ایڈریس کے بغیر ہی منزل پر پہنچ گیا، کیسے؟ جان کر آپ بھی حیرت میں ڈوب جائیں گے

آئس لینڈ میں لکھا گیاخط ایڈریس کے بغیر ہی منزل پر پہنچ گیا، کیسے؟ جان کر آپ ...
آئس لینڈ میں لکھا گیاخط ایڈریس کے بغیر ہی منزل پر پہنچ گیا، کیسے؟ جان کر آپ بھی حیرت میں ڈوب جائیں گے

  


بودا ڈالا(مانیٹرنگ ڈیسک)نقشوں کی مدد سے خزانہ ڈھونڈنا تو سنتے ہی آئے ہیں،نقشے کی مدد سے خط منزل تک پہنچ جائے،ایسا پہلی بار ہی ہوا ہے، اپنی نوعیت کی انوکھی ترین مثال آئس لینڈ میں قائم ہوئی جہاں ایک شہری نے خط مکتوب الیہ تک پہنچانے کے لئے اس پر پتہ درج کرنے کے بجائے نقشہ بناڈالا ۔آئس لینڈ کے شہر بوداڈالا کی رہائشی ربیکا کیتھرین کو ملنے والا یہ خط ملک کے درالحکومت سے ایک سیاح نے پوسٹ کیا تھا ،لفافے پر پتہ درج کرنے بجائے ”ملک: آئس لینڈ، شہر: بوداڈالا، نام ایک گھوڑے کا فارم اور ڈینس میاں بیوی تین بچوں اور بہت ساری بھیڑوں کے ساتھ“ انگریزی حروف میں لکھا ہوا تھا۔

کیتھرین نے جب یہ خط وصول کیا تو اس کی حیرت کی انتہا نہ رہی۔خط لکھنے والا سیاح کیتھرین کے فارم میں قیام کرچکا تھا لیکن شاید مکمل پتہ نہیں جانتا تھا۔پتے کے بجائے نقشے کی مدد سے خط بھیجنے کا یہ واقعہ رواں سال مارچ میں سامنے آیا تاہم مئی تک کسی کو اس کی بھنک بھی نہ پڑی، جب مقامی ویب سائٹ نے اس کہانی کو شیئر کیا توپھر یہ عالمی میڈیا کی زینت بھی بن گیا،اس وقت بھی میٹرو یوکے،بوردپانڈا ڈاٹ کام اور بی بی سی سمیت مختلف ویب سائٹس اور عالمی اخبارات کے آن لائن ایڈیشنز پر اس خط کی تصاویر دیکھی جاسکتی ہیں۔

مزید : بین الاقوامی


loading...