سپریم کورٹ کا نیب کو کم مالیت کے کرپشن کیس اینٹی کرپشن کو بھجوانے کا حکم

سپریم کورٹ کا نیب کو کم مالیت کے کرپشن کیس اینٹی کرپشن کو بھجوانے کا حکم
سپریم کورٹ کا نیب کو کم مالیت کے کرپشن کیس اینٹی کرپشن کو بھجوانے کا حکم

  


اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) سپریم کورٹ نے چھوٹے کم مالیت کے کرپشن کیس اینٹی کرپشن کو بھجوانے کا حکم دیتے ہوئے اینٹی کرپشن اور ڈائریکٹر ایف آئی اے کو فوری طلب کر لیا ہے۔ جسٹس امیر ہانی مسلم نے ریمارکس دئیے کہ نیب میگا کرپشن کے خلاف بنایا گیا ، چھوٹی کارروائیوں کیلئے نہیں۔

وہ پاکستانی جس نے 10ہزار روپے کودیکھتے ہی دیکھتے لاکھوں کے کاروبارمیں بدل ڈالا، تمام پاکستانیوں کیلئے مثال بن گیا

نجی ٹی وی جیو نیوز کے مطابق سپریم کورٹ میں نیب کے اختیارات سے متعلق کیس کی سماعت ہوئی جس دوران پراسیکیوٹر جنرل وقاص ڈار اور ڈی جی نیب سندھ سراج النعیم نے رپورٹ پیش کی۔ رپورٹ میں بتایا گیا کہ ایک کروڑ روپے سے کم مالیت کے 28 ریفرنسز سندھ میں دائر جس پر جسٹس امیر ہانی مسلم نے استفسار کیا کہ یہ ڈیڑھ لاکھ،2 لاکھ کی انکوائریاں کس قانون کے تحت ہو رہی ہیں اور جو فہرست آپ نے دی ہے اس میں کتنے میگا کیسز ہیں۔ ڈی جی نیب نے جواب دیا کہ فہرست میں کوئی میگا کیس نہیں جس پر جسٹس امیر ہانی مسلم نے کہا کہ نیب میگاکرپشن کیخلاف کارروائی کیلئے بنایاگیا،چھوٹی کارروائیوں کیلئے نہیں، کم مالیت کے کرپشن کیسز اینٹی کرپشن کو بھجوادئیے جائیں۔

روزنامہ پاکستان کی اینڈرائڈ موبائل ایپ ڈاؤن لوڈ کرنے کیلئے یہاں کلک کریں

جسٹس امیر ہانی مسلم نے کہا کہ کلرکوں کو رضاکارانہ سکیم کے نام پر پیسے لے کر نوکریوں پر بھیجا جا رہا ہے اور وہ واپس جا کر پھر لوٹ مار میں مصروف ہو جاتے ہیں۔ پیسے لے کر نوکری پپر بحال کرنا کرپشن کو ضرب دینے کے برابر ہے۔

مزید : اسلام آباد /اہم خبریں


loading...