موت کو اپنے قابو میں کرنے کی کوشش ہونے والی دلہن کی واقعی جان لے گئی

موت کو اپنے قابو میں کرنے کی کوشش ہونے والی دلہن کی واقعی جان لے گئی
موت کو اپنے قابو میں کرنے کی کوشش ہونے والی دلہن کی واقعی جان لے گئی

  


لندن (نیوز ڈیسک) موت ایک ایسا سفر ہے جس پر روانہ ہونے والے کبھی نہیں لوٹتے، لیکن عجب حیرت کی بات ہے کہ اس دنیا میں ایسے لوگ بھی ہیں جو سمجھتے ہیں کچھ وقت کے لئے اگلی دنیا کا چکر لگاکر واپس اسی دنیا میں لوٹ آئیں گے۔ نادانی کی یہ انتہا برطانوی شہر مانچسٹر سے تعلق رکھنے والی ایک نوجوان لڑکی نے کی ہے، جو موت کو اپنے قابو میں لانے کی کوشش کرتے ہوئے اپنی شادی سے عین پہلے اگلی دنیا سدھار گئی۔

میل آن لائن کی ایک رپورٹ کے مطابق فروری کے مہینے میں ڈائیون کاربٹ نامی دوشیزہ کی موت ہوگئی تو اس کی گہری سہیلی یاسمین ہاورت پر غموں کا پہاڑ ٹوٹ پڑا۔ دونوں بچپن سے ایک ساتھ رہی تھیں اور ایک دوسرے کے بغیر رہنے کا تصور بھی نہیں کرتی تھیں۔ ڈائیون تو دنیا سے رخصت ہوگئی لیکن یاسمین اس سے ایک بار ملنے کو تڑپنے لگی۔ دنیا سے رخصت ہونے والی سہیلی سے دوبارہ ملنے کی یہ تڑپ تو شاید کوئی غیر معمولی بات نہ تھی مگر یہ بات یقینا حیرتناک ہے کہ یاسمین یہ سمجھ رہی تھی کہ وہ چند ساعتوں کے لئے موت کی وادی میں جاکر اپنی سہیلی سے آخری ملاقات کرے گی اور پھر واپس اسی دنیا میں لوٹ آئے گی۔

چھٹیوں پر گئی لڑکی نے فون کرکے پولیس بلالی، پولیس نے آکر وجہ پوچھی تو ایسی بات کہہ دی کہ پولیس والے بھی ہکا بکا رہ گئے

یاسمین کے منگیتر برینڈن کاﺅلی نے بتایا کہ ڈائیون کی موت کے بعد ایک رات اس کی آنکھ کھلی تو دیکھا کہ یاسمین کرسی پر بیٹھی ایک کاغذ پر کچھ لکھ رہی تھی۔ کمرے میں ٹی وی کے سگنل آن آف ہونے سے پراسرار شوربلند ہورہا تھا۔ برینڈن کا کہنا ہے کہ جب انہوں نے یاسمین سے پوچھا کہ وہ کیا کررہی ہے تو اس نے ٹی وی سے آنے والے شور کی جانب اشارہ کرتے ہوئے کہا کہ شاید ڈائیون اس سے کچھ کہنا چاہ رہی ہے اور وہ اسے الفاظ کی صورت میں تحریر کررہی تھی۔ برینڈن نے بتایا کہ اس سے پہلے یاسمین کے تحریر کردہ متعدد خطوط سے بھی یہ بات سامنے آچکی تھی کہ وہ سمجھتی تھی کہ کچھ وقت کے لئے دوسری دنیا میں جاکر اپنی دوست سے ملے گی اور پھر واپس آ جائے گی۔ بالآخر ایک دن اس نے اپنی احمقانہ سوچ پر واقعی عمل کر ڈالا اور گلے میں پھندا ڈال کر لٹک گئی۔

برینڈن کاﺅلی کا کہنا تھا کہ وہ یاسمین کو گھر سے غائب پاکر اس کی تلاش میں نکلے تھے اور پھر قریبی جنگل میں اس کی لاش لٹکتی ہوئی مل گئی۔ انہوں نے دکھ کا اظہار کرتے ہوئے کہا ”شاید وہ دنیا سے رخصت ہونے والی اپنی سہیلی کے پاس تو پہنچ گئی، مگر اس کا واپسی کا خواب کبھی پورا نہ ہو سکے گا۔“

مزید : ڈیلی بائیٹس


loading...