ریکوڈک کیس کے وکلا ساڑھے 3 ارب فیس لے چکے : وزیر اعلیٰ بلوچستان

02 ستمبر 2018 (15:10)

کوئٹہ(آن لائن)وزیراعلیٰ بلوچستان جام کمال نے کہا ہے کہ ریکوڈک کیس کے وکلا بلوچستان حکومت سے ساڑے تین ارب روپے فیس لے چکے ہیں ہم کیس ہار گئے ہیں تو10 بلین ڈالر ہرجانہ ہو سکتا ہے جو ہمارے پاس نہیں ہے اٹھارویں ترمیم کے تحت بلوچستان کو کچھ نہیں ملا ۔

نجی ٹی وی سے بات چیت کر تے ہوئے انہوں نے کہا کہ بلوچستان میں دہشتگردی کے پیچھے مقامی، علاقائی اور عالمی عناصر ہیں سب سے بڑا مسئلہ افغان سرحد ہے روزانہ ڈیڑھ کلو میٹرسرحد پر باڑ کاکام مکمل کیاجاتا ہے بلوچستان میں فرقہ وارانہ ،مذہبی قبائلی، ریاست مخالف، ودیگر اقسام کی بدامنی رہی ہے افغانستان میں چالیس سالہ جنگ کے اثرات پاکستان پر پڑے ہیں بات چیت صرف پاکستان اور آئین ماننے والوں سے کریں گے ۔ کوئٹہ اور ہنہ اوڑک میں بننے والے دو وزیراعلی ہاوسز پر ایک ارب روپے سے زائد خرچہ آیا ہے اسے عوام کیلئے استعمال میں لائیں گے ۔

انہوں نے کہاکہ کوشش کریں گے کہ ریکوڈک کے حوالے سے بات چیت سے مسئلہ حل کیا جائے ۔ محکمہ تعلیم میں دس ہزار نوکریوں پر بھرتیاں میرٹ پر ھوگی جہاں سکول ہے وہاں سٹوڈنٹس نہیں ہے جہاں دونوں ہے وہاں ٹیچر نہیں ہے ۔ 

 

مزیدخبریں