حلقہ پی کے 80 میں بجلی کی فراہمی پر 96 کروڑ خرچ ہوئے ہیں،امجد آفریدی

  حلقہ پی کے 80 میں بجلی کی فراہمی پر 96 کروڑ خرچ ہوئے ہیں،امجد آفریدی

  

کوھاٹ (بیورو رپورٹ) حلقہ پی کے 80 میں بجلی کی مد میں 96 کروڑ خرچ کر چکے ہیں جو کہ ریکارڈ پر ہے سیاسی مخالفین کے منفی ہتھکنڈوں کی وجہ سے ہزاروں کھمبے اور ٹرانس فارمرز عوام تک نہیں پہنچ رہے وومن یونیورسٹی کے لیے انڈس ہائی وے پر 190کنال زمین منظور کروا لی ہے چار اب روپے گیس کے لیے جمع کروائے ہوئے ہیں بعض سیاسی نابالغ ترقیاتی کاموں میں روڑے اٹکا کر عوام کی مشکلات میں اضافہ کر رہے ہیں ایسے عناصر کا عوام خود گھراؤ کرے ان خیالات کا اظہار عوامی ممبر صوبائی اسمبلی ملک امجد خان آفریدی نے محلہ خدر خیل گمبٹ میں عوامی جلسے سے خطاب کرتے ہوئے کیا انہوں نے کہاکہ اگر وفاقی وزیر میرے کام میں رکاوٹیں نہ ڈالتا تو آج حلقہ 80میں بجلی اور گیس کو کائی مسئلہ نہ ہوتا آج ہمارے منظور کردہ بجلی کے فیڈرز کا افتتاح یہ لوگ کر ہے ہیں انہوں نے شہریار آفریدی سے سوال کرتے ہوئے کیا کہ وہ بتائیں کہ انہوں نے دو سالوں میں بطور وفاقی وزیر کتنے فیڈرز منظور کروائے ہیں ہم نے واپڈاکے لیے 30 کروڑ جمع کیے مگر آج بھی کام بند پڑا ہے صرف گمبٹ میں 250 کھمبے زمین پر پڑے ہیں بجلی کے کاموں میں رکاوٹ ڈالنے سے امجد آفریدی سے زیادہ تکلیف حلقے کے ان بزرگوں‘ ماؤوں‘ بہنوں اور بچوں کو ہوتی ہے جو بجلی نہ ہونے یا کم وولٹیج کی وجہ سے پریشانی کا شکار ہیں چار ارب روپے گیس کے لیے دیئے 1 ارب روپے SNGPL کے دفتر میں جمع کروائے مگر کوئی پوچھنے والا نہیں کہ کام کیوں نہیں ہو رہا تبدیلی کے نعرے لگانے والے یہ تبدیلی لائے ہیں کہ ترقیاتی کام بند کروا دیئے ہیں وومن یونیورسٹی کے حوالے سے انہوں نے اعلان کیا کہ کوھاٹ ڈویژن کی پہلی وومن یونیورسٹی حلقہ 80بن بنے گی آج افسوس وومن یونیورسٹی کی تعمیر میں بھی روڑے اٹکائے جا رہے ہیں وائس چانسلر کو کہا جا رہا ہے کہ کسٹ کیاندر وومن یونیورسٹی میں تعلیم حاصل کریں بلی ٹنگ گرلز کالج کا ایک حصہ وومن یونیورسٹی کی کلاسز کے لیے مختص کر دیا ہے تاکہ کلاسز کا اجراء ہو سکے انہوں نے حلقے کی عوام کو خوشخبری سناتے ہوئے کہا کہ انڈس ہائی وے پر ٹول پلازہ کے قریب 190کنال زمین یونیورسٹی کے لیے منظور کروا لی ہے انہوں نے مزید کہا کہ گمبٹ کی عوام شاملات میں جگہ دے تاکہ نوجوانوں کے لیے دوسرا گراؤنڈ بنا سکوں ہم خدمت کے لیے آئے ہیں عوام سے کبھی منافقت نہیں کی ہم نے ملک سسٹم کو ختم کر دیا ہے حلقے کا کوئی بھی شخص بغیر کسی سفارش کے اپنے کام کے لیے آ سکتا ہے ہمارے حجرے کے دروازے بلاتفریق سب کے لیے کھلے ہیں انہوں نے گمبٹ میں ترقیاتی کاموں کے حوالے سے کہا کہ محلہ اعوان میں واٹر ٹینک بنائی ہے خدر خیل میں ٹینکی بنا لی ہے پرانے پائپ لائنوں کی جگہ نئی پائپ لائن بچھائی ہے انہوں نے کوھاٹ سے منتخب ایم این اے اور ممبر صوبائی اسمبلی کو کہا کہ وہ عوام کی خدمت میں روڑے نہ اٹکائیں صوبائی مشیر تعلیم بتائیں کہ انہوں نے 2 سالہ دور میں کوھاٹ میں کتنے سکول منظور کیے آج اکبر ایوب نے عہدہ سنبھالتے ہی ہری پور کے لیے 34 سکولوں کی منظوری حاصل کر لی ہے آج مجھے بھی اللہ نے موقع دیا ہیکہ میں نے بھی اپوزیشن میں ہوتے ہوئے خواجہ پائل اور کوٹیری میں دو ہائی سکول منظور کروا لیے ہیں جبکہ ری کنسٹرکشن میں پانچ ہائی سکولوں کی اجازت لی انہوں نے عوام سے اپیل کی کہ وہ اپنے حق کے لیے اٹھ کھڑے ہوں جو بھی عوامی نمائندہ ان کے حق پر ڈاکہ ڈالے اس کا گھیراؤ کریں اور کبھی اپنے حقوق پر سمجھوتا نہ کریں۔ 

مزید :

پشاورصفحہ آخر -