سول سیکرٹریٹ کے نام پر نئی تعیناتیاں صرف ڈرامہ‘ سرائیکستان صوبہ محاذ 

سول سیکرٹریٹ کے نام پر نئی تعیناتیاں صرف ڈرامہ‘ سرائیکستان صوبہ محاذ 

  

 ملتان (سٹی رپورٹر)سول سیکرٹریٹ کے نام پر نئی تعیناتیاں ڈھونگ ہیں، سول سیکرٹریٹ نہیں صوبہ چاہئے۔ وسیب میں تفریق پیدا کرنے اور صوبہ سرائیکستان کا راستہ روکنے کی ہر سازش کا مقابلہ کریں گے۔ حکومت سرائیکی وسیب کے خلاف استعماری حربے استعمال (بقیہ نمبر45صفحہ6پر)

کرنے کی بجائے سرائیکی صوبے کیلئے سینٹ سے دو تہائی اکثریت کے ساتھ پاس ہونے والے آئینی بل کے مطابق سرائیکی صوبے کے قیام کیلئے اقدامات کرے۔ ان خیالات کا اظہار سرائیکستان صوبہ محاذ کے رہنماؤں خواجہ غلام فرید کوریجہ، کرنل (ر) عبدالجبار خان عباسی، ظہور دھریجہ، خضر حیات ڈیال، عاشق بزدار، اکبر خان ملکانی، مہر مظہر کات، شریف خان لاشاری، حاجی عید احمد دھریجہ، ملک غلام عباس ملنہاس نے سول سیکرٹریٹ کیلئے نئی تعیناتیوں پر رد عمل کا اظہار کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ سول سیکرٹریٹ ڈھونگ اور ملتان بہاولپور کو لڑانے کی سازش ہے جسے وسیب کے لوگ حقارت سے مسترد کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پنجاب بیورو کریسی سے جو افسر تعینات کئے گئے ہیں اس طرح کے افسر کمشنر اور ڈپٹی کمشنر کی صورت میں وسیب میں پہلے ہی موجود ہیں۔ وسیب کے لوگوں کو پہلے لاہور کے چکر کھانے پڑتے تھے اب معمولی کاموں کیلئے بھی ملتان بہاولپور اور لاہور کے دھکے کھانے پڑیں گے۔ انہوں نے کہا کہ سول سیکرٹریٹ کی قانون میں کوئی گنجائش نہیں۔ حکمران وسیب کے لوگوں کو بیوقوف بنا رہے ہیں اور پنجاب کی طاقتور بیورو کریسی کے ذریعے وسیب کے مزید وسائل ہڑپ کرنا چاہتے ہیں اور صوبے کا راستہ روکنا چاہتے ہیں جس کے خلاف ہمارا احتجاج جاری رہے گا۔ سرائیکی رہنماؤں نے کہا کہ ہمارا دو ٹوک مطالبہ وسیب کی مکمل حدود اور اس کی تہذیبی و جغرافیائی شناخت کے مطابق صوبہ سرائیکستان دارالحکومت ملتان کا ہے۔ ہم انتظامی صوبے کے قائل نہیں، مگر حکمرانوں کی اگر نیت صاف ہوتی تو اسمبلی سے صوبے کی منظوری سے پہلے عبوری طور پر گلگت، بلتستان کی طرح آرڈیننس کے ذریعے صوبہ بنا سکتے تھے اور تمام افسران وسیب کے تعینات کر سکتے تھے مگر چونکہ حکمرانوں کی نیت صوبہ بنانے کی بجائے صوبے کا مقدمہ خراب کرنا ہے اور وسیب میں تفریق پیدا کرنے والی ہے اس لیے وہ سول سیکرٹریٹ کا ڈھونگ رچا رہے ہیں اور تمام افسران پنجاب کے مسلط کر رہے ہیں۔

صوبہ محاذ

مزید :

ملتان صفحہ آخر -