ڈی ایس پی کا کانسٹیبل کو تھپڑ‘ ایڈیشنل آئی جی کا نوٹس

 ڈی ایس پی کا کانسٹیبل کو تھپڑ‘ ایڈیشنل آئی جی کا نوٹس

  

ملتان + ٹھٹھہ صادق آباد(وقائع نگار‘ نامہ نگار) ڈی ایس پی نے پولیس کانسٹیبل کو تھپڑ رسید کردیا, ویڈیو وائرل ہونے پر ایس ایچ او نے کاروائی نہ کرنے کا بیان لے لیا, ایڈیشنل آئی جی جنوبی پنجاب نے واقعہ کا نوٹس لے لیا, انکوائری کے حکم پر ڈی پی او خانیوال تھانہ جہانیاں پہنچ گئے تفصیل کے مطابق ڈی ایس پی سرکل جہانیاں غلام مصطفی نے یوم عاشورہ کے موقع پر عدم برداشت کا مظاہرہ کرتے ہوئے پولیس اہلکار (بقیہ نمبر30صفحہ6پر)

کو تھپڑ رسید کیا اور برا بھلا کہا, اہلکار کی انصاف کے مطالبہ کی ویڈیو وائرل ہوئی تو ایڈیشنل آئی جی جنوبی پنجاب نے نوٹس لیتے ہوئے ڈی پی او خانیوال کو انکوائری کا حکم دے دیا, ڈی پی او خانیوال علی وسیم نے تھانہ جہانیاں پہنچ کر دونوں فریقین کے بیان قلم بند کرلئے, پولیس اہلکار عابد میتلا نے اپنے تحریری بیان میں موقف اختیار کیا ہے کہ وہ پرانا ڈاکخانہ بازار میں ڈیوٹی پر موجود تھا کہ ڈی ایس پی نے آکر ڈیوٹی بارے استفسار کیا اور غصہ میں اس کے منہ پر تھپڑ رسید کردیا, افسران سے انصاف  کے مطالبہ پر مبنی اسکی ویڈیو وائرل ہوئی تو  ایس ایچ او ذوالفقار اولکھ جلوس کے دوران ہی اسے ایک دکان میں لے گیا اور  155 سی کا مقدمہ درج کرنے کی دھمکی دیکر زبردستی تھپڑ نہ مارنے کا بیان ریکارڈ کرلیا, اہلکار نے واقعہ کی سی سی ٹی وی فوٹیج ڈی پی او کے حوالہ کردی, اہلکار کا کہنا ہے کہ ویڈیو میں ڈی ایس پی تھپڑ اور دھکے دیتے صاف دکھائی دے رہے ہیں, یاد رہے ڈی ایس پی غلام مصطفی اس سے قبل بھی اہلکاروں کو مارنے اور کان پکڑوانے کی شہرت رکھتے ہیں جبکہ انھوں نے اپنے ریڈر پر دفتر داخلے پر پابندی عائد کررکھی ہے۔

نوٹس

مزید :

ملتان صفحہ آخر -