سیم نالوں اور نہروں میں شگاف کی تحقیقات کرائی جائے گی: وزیر اعلٰی سندھ 

  سیم نالوں اور نہروں میں شگاف کی تحقیقات کرائی جائے گی: وزیر اعلٰی سندھ 

  

 کراچی/میرپورخاص(اسٹاف رپورٹر) وزیر اعلیٰ سندھ سیدمراد علی شاہ نے کہا ہے کہ طوفانی بارشوں کے بعد سندھ بھر میں ہونے والے نقصانات کا ازالہ کیا جائے گااس مقصد کیلئے میں خود سندھ کے مختلف اضلاع کا دورہ کررہا ہوں۔ انہوں نے کہا کہ  جہاں جہاں گھروں اور فصلوں کو نقصان پہنچا ہے اس کے ازالے کیلئے منتخب نمائندوں اور ریونیو افسران پر مشتمل کمیٹیاں تشکیل دی جائیں گی جوسروے کرکے ہونے والے نقصانات کی رپورٹ دیں گی، رپورٹ کی ر وشنی میں نقصانات کا معاوضہ دیا جائے گا یہ بات انہوں نے ٹنڈوجان محمدسیم نالے جھڈو اور میرکوٹ جان محمدسیم نالے میں پڑنے والے شگاف سے درپیش مسائل معلوم کرنے کیلئے لوگوں سے ملاقات کے موقعہ پر کہی۔ انہوں نے کہا کہ بدقسمتی سے پورے سندھ میں  2011کے سیلاب کے بعد یہ بڑی قدرتی آفت ہے اس سے نمٹنے کیلئے جامع پالیسی بنائی جارہی ہے۔انہوں نے کہاکہ  لانگ ٹرم میں سیم نالوں اور نہروں کے کناروں کو پختہ کرایا جائے گا۔ میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے وزیراعلی سندھ نے کہا کہ سندھ حکومت کو کورونا کے بعد اس قدرتی آفت کاسامنا کرنا پڑ رہا ہے ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ جہاں جہاں سیم نالوں اور نہروں میں شگاف پڑے ہیں ان کی تحقیقات کرائی جائے گی اور  کوتاہی میں ملوث افراد کے خلاف کاروائی کی جائے گی۔ وزیراعلی سندھ نے کمشنر اور ڈپٹی کمشنر میرپورخاص اوردیگر متعلقہ افسران کو ہدایت کی کہ متاثرین کو خیمے اور کھانے پینے کا سامان دیا جائے۔ وزیراعلی سندھ نے ماروی پل روشن آباد نوکوٹ اورپرانی موری جھڈومیں پڑنے والے شگاف کا معائنہ کیا۔ انہوں نے لوگوں کو یقین دلایا کہ شگاف بند ہونے تک کھانے پینے کا سامان فراہم کیا جائے گا۔روشن آباد ایل بی اوڈی پر محکمہ آبپاشی کے افسران نیوزیراعلی سندھ کوبریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ ایل بی اوڈی نالے میں اپنے ڈیزائن سے دگنا پانی موجود ہے اور محکمہ آبپاشی کے عملے کو الرٹ کردیا گیا ہے جوکیمپ قائم کر نے کے بعد دن رات موجود ہے۔ ٹنڈوجان محمد ہیلی پیڈ پر کمشنرعبدالوحید شیخ اور ڈپٹی کمشنر زاہدحسین میمن نے ضلعی انتظامیہ کی جانب سے کئے گئے اقدامات کے متعلق وزیراعلی سندھ کو تفصیلی بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ شہروں سے بارش کے پانی کی نکاسی مشینوں کے ذریعے کی جارہی ہے اور کئی دیہات جو زیر آب  آگئے ہیں وہاں کے پانی کی نکاسی کیلئے مقامی انتظامیہ کو ہدایات جاری کر دی گئی ہیں۔قبل ازیں وزیراعلی سندھ  سید مراد علی شاہ نے سیلابی صورتحال  کا جائزہ لینے  کے لیے میرپورخاص ڈویژن کا دورہ کیا۔ وزیراعلی سندھ نے   اپنے موبائل  سے میرپورخاص، سامارو، ٹنڈو جان محمد کی ہیلی کاپٹر  سے بھی سیلابی  صورتحال  کی ویڈیو بھی بنائی۔ وزیراعلی سندھ نے   بارش  سے متاثرہ  لوگوں سے  ملاقات  کی  اور ریلیف  کے کاموں کا جائزہ بھی لیا۔وزیراعلی سندھ نے کھپرو  میں اپنے  دورے کے دوران  کہا کہ ہم اپنے عوام کوتنہا نہیں چھوڑیں گے۔ہم نے سامارو، ٹنڈو جان محمد، عمر کوٹ  میں کیمپس قائم کیے ہیں۔کیمپس میں کھانا، ادویات، ویٹرنری اور دیگر سہولیات کا بندوبست کیا ہے۔ ہم کوشش کررہے ہیں کہ گھروں، فصلوں  اور جانی نقصانات کا ازالہ کریں۔وزیراعلی سندھ سید مراد علی شاہ  نے عمر کوٹ  میں پاکستان چوک پر قائم کیمپ کا دورہ بھی کیا۔ کیمپ  میں 300ٹینٹس  لگائے  گئے ہیں۔کیمپس  میں بارش سے متاثرہ علاقوں  کے لوگ ہیں۔وزیر اعلی سندھ  نے کیمپس  میں سہولیات  کا جائزہ لیا اور متاثرہ لوگوں  کے مسائل  بھی سنے۔انہوں نے کہا کہ یہاں  آنے کا مقصد سیلاب متاثرین سے ملنا اور ان کے مسائل حل کرنا ہیں۔ہماری ترجیحات میں  متاثرین کو کھانے پینے کی فراہمی  اور ٹینٹ کا بندوبست کرنا ہے۔وزیراعلی سندھ نے کہاکہ 2011 میں وفاقی حکومت ہماری تھی اب نہیں ہے۔وزیر اعظم سے بات ہوئی ہے، مجھے امید ہے کہ وہ  پورے سندھ کو ایک ہی نظر سے دیکھیں گے۔انہوں نے کہا کہ اس مشکل وقت میں سیاست نہیں کرنی چاہیے شبلی صاحب کو شاید  اندازہ نہیں کہ ایسے وقت میں  لوگوں کی مدد کی جاتی ہے۔شبلی کے بیان سے اندازہ ہوتا ہے کہ وہ لوگوں کی مدد کرنا نہیں چاہتے۔اس سال کراچی سمیت سندھ بھر میں بارشوں نے تمام سابقہ ریکارڈ توڑ دیئے۔ہم نے یہ طے کیا ہے کہ ہائیر ایجوکیشن یونیورسٹیز کے بعد مرحلہ وار اسکول کھولیں گے کیوں کہ بچوں کو ایس اوپیز پر عمل کرانا مشکل ہے۔صوبائی وزرا سید ناصرشاہ، ہری رام کشوری لال،امدادپتافی،ایم این اے غلام علی، شمیم آرا  پنہور،ایم پی اے نوراحمد بھرگڑی، چیئرمین ضلع کونسل میر انورتالپور، صدر ضلع بدین رمضان چانڈیو اور متعلقہ محکموں کے افسران بھی اس موقع پر موجود تھے۔

مزید :

صفحہ اول -