طلعت حسین نے تنقید کرنے والوں کو لاجواب کر دیا

طلعت حسین نے تنقید کرنے والوں کو لاجواب کر دیا

  

لاہور(فلم رپورٹر)اداکار طلعت حسین نے ان پر تنقید کرنے والوں کو یہ کہہ کر لاجواب کر دیا ہے کہ فنکار کبھی ایوارڈ کے لئے کام نہیں کرتے۔صدر پاکستان کی جانب سے 79 سالہ طلعت حسین کو ان کی شاندار اداکاری کے باعث ستارہ امتیاز ایوارڈ دینے کا اعلان کیا گیا تھا اور انہیں پہلی بار حکومت کی جانب سے اعلیٰ سول ایوارڈ سے نوازا جائے گا۔طلعت حسین نے کہا کہ انہیں اتنی تاخیر سے حکومت کی جانب سے اعلیٰ سول ایوارڈ دیئے جانے پر کوئی اعتراض نہیں۔ جو انہیں تاخیر سے ایوارڈ دیئے جانے کی باتیں کر رہے ہیں۔

وہ لوگ اپنی ذہنی استطاعت کے مطابق باتیں کر رہے ہیں اور انہیں ایسی باتوں پر کوئی یقین نہیں کیونکہ اداکار ایوارڈ کے لئے کام نہیں کرتے۔طلعت حسین نے حالیہ پاکستانی ڈراموں کی کہانیوں پر مایوسی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ انہیں تو آج کل کے ڈراموں کے اسکرپٹ ہی سمجھ نہیں آتے اور اسی وجہ سے ہی وہ آج کل کام نہیں کرتے۔ساتھ ہی انہوں نے اعتراف کیا کہ اب انہیں اداکاری کی پیش کش بھی نہیں ہوتی تاہم انہوں نے اداکاری کی پیش کش نہ ملنے کی وجوہات بیان نہیں کیں۔طلعت حسین نے انکشاف کیا کہ والد کی وفات کے بعد گھر میں مالی مشکلات کے باعث انہوں نے کم عمری میں ہی نوکری کرنا شروع کی تھی اور ایک دوست نے انہیں سینما کے گیٹ کیپر کی نوکری دلوائی تھی۔انہوں نے بتایا کہ ان کے دوست نے انہیں کراچی کے لیرک سینما میں گیٹ کیپر کی نوکری دلوائی مگر وہاں کے منیجر نے دیکھا کہ وہ تعلیم یافتہ ہیں تو انہوں نے انہیں ایڈوانس بکنگ سیکشن میں رکھوا دیا۔ ابتدائی طور پر انہوں نے ریڈیو پاکستان میں صداکاری سے اپنے کیریئر کا آغاز کیا تاہم بعد ازاں پاکستان ٹیلی وڑن کے ایم ڈی اسلم اظہر نے انہیں اداکاری پر توجہ دینے کا کہا اور پھر 1964 کے بعد ان کی اداکاری کا آغاز ہوا۔اداکاری میں قدم رکھنے کے چند سال بعد ہی طلعت حسین اداکاری کی اعلیٰ تعلیم حاصل کرنے لندن چلے گئے اور وہاں بھی انہوں نے اسٹیج و تھیٹر پر کام کرنے سمیت نشریاتی اداروں کے ساتھ بھی کام کیا۔لندن سے واپسی کے بعد انہوں نے ایک بار پھر اداکاری کا آغاز کیا اور انہوں نے گزشتہ 5 دہائیوں میں پی ٹی وی کے درجنوں ڈراموں میں شاندار کردار ادا کئے۔طلعت حسین نے کچھ فلموں میں بھی کام کیا جب کہ انہوں نے اسٹیج تھیٹرز میں بھی جوہر دکھائے اور کئی منصوبوں میں وائس اوور بھی کی۔

مزید :

کلچر -