کیا کہیں تم سے بود و باش اپنی

کیا کہیں تم سے بود و باش اپنی
کیا کہیں تم سے بود و باش اپنی

  

کیا کہیں تم سے بود و باش اپنی

کام ہی کیا وہی تلاش اپنی

کوئی دم ایسی زندگی بھی کریں

اپنا سینہ ہو اور خراش اپنی

اپنے ہی تیشہ ندامت سے

ذات ہے اب تو پاش پاش اپنی

ہے لبوں پر نفس زنی کی دکاں

یاوہ گوئی ہے بس معاش اپنی

تیری صورت پہ ہوں نثار پہ اب

اور صورت کوئی تراش اپنی

جسم و جاں کوتو بیچ ہی ڈالا

اب مجھے بیچنی ہے لاش اپنی

شاعر: جون ایلیا

Kia Kahen Tum Say Bood  o baash Apni

Kaam Hi Kia Wahi Talaash Apni

Koi Dam Aisi Zindagi Bhi Karen

Apna Seena Ho Aor Kharaash Apni

Apnay Hi Teshaa  e  Nadaamt Say

Zaat Hay Ab To Paash Paash Apni

Hay Labon Par Nafas Zani Ki Dukaan

Ya Wo Goi hay Bass Muaash Apni

Teri Soorat Pe Hun Nisaar Yeh Ab

Aor Soorat Koi Taraash Apni

Jism  o  Jaan Ko To Baich Daala

Ab Mujhay Baichni Hay Laash Apni

Poet: Jaun Elia

مزید :

شاعری -رومانوی شاعری -غمگین شاعری -