سندھ تاجر اتحاد کی ملک گیر کنونشن کی تیاریاںزور و شور سے جاری

سندھ تاجر اتحاد کی ملک گیر کنونشن کی تیاریاںزور و شور سے جاری

کراچی (اکنامک رپورٹر) سندھ تاجر اتحاد کی جانب سے 6 اپریل کو کراچی میں منعقد ملک گیر کنونشن کی تیاریاںزور و شور سے جاری ہے ملک بھر میں دعوت ناموں کی تقسیم شروع ہو گئی ہے اس حوالے سے سندھ تاجر اتحاد کے چیئرمین جمیل پراچہ نے مختلف تاجروں اور تاجر تنظیموں کو دعوت نامے دیتے ہوئے گفتگو کے دوران کہا کہ تاجر برادری کے چھوٹے تاجروں کو اس بار بھی نگراں سیٹ اپ میں نظر انداز کردیا گیا ہے جبکہ چھوٹے تاجر ملک بھر میں ایک کڑور سے زائد ہیں اور ملکی ریونیو میں سالانہ 16سو ارب سے زائد ٹیکس ادا کر رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ہمیشہ چھوٹے تاجروں کو نظر انداز کئے جانے سے ان میں شدید احساس محرومی پیدا ہو رہا ہے انہوں نے مطالبہ کیا کہ نگراں وفاقی کابینہ میں 2اور چاروں صوبائی کابینہ میں ایک ایک وزیر او ر ایک ایک مشیر چھوٹے تاجروں کو بنا نا چاہیئے کیونکہ ملک بھر میں 1کڑور سے زائد چھوٹے تاجر اور انکی فیملیاں اور ان کے ملازمین ملا کر 2کڑور تک ووٹر ہیں جو پاکستان کے کال ووٹر ز جو کہ 9کڑور ہیں (رجسٹرڈ) اُنکا% 25 سے 30% فیصد ہیں لہذا چھوٹے تاجروں کے ساتھ ناانصافی نہیں ہونی چاہیئے جمیل پراچہ نے کہا کہ تاجر کنونشن تاجروں کی تاریخ رقم کرے گا۔تاجروں کے حقوق کا ضامن ہوگا انہوں نے کہا کہ تاجر کنونشن کے مطالبات حکومت سیاسی جماعتوں ، اسٹبلشمنٹ کو بھی ارسال کیئے جائیں گے انہوں نے کہا کہ ملکی معاملات میں 16سو ارب سے زائد کا ٹیکس دینے والے تاجروں کی شمولیت کے بغیر ترقی اور خوشحالی ممکن نہیں ہے انہوں نے صدر پاکستان ، نگراں وزیر اعظم ، چاروں صوبائی گورنر ز اور چاروں نگراں وزیر اعلیٰ سے مطالبہ کیا کہ نگراں کابینہ میں چھوٹے تاجروں کو بھی فوری نمائندگی دی جائے تاکہ اُنکا احساس محرومی بھی ختم ہواور ملکی معاملات میں توازن پیدا ہو جائے۔

مزید : کامرس


loading...