حماس کے اسیران کی ابو حمدیہ کی حمایت میں بھوک ہڑتال

حماس کے اسیران کی ابو حمدیہ کی حمایت میں بھوک ہڑتال

غزہ( اے این این )ایشیل جیل میں قید فلسطینی اسیران نے اپنے ساتھی اسیر ابو حمدیہ کی حمایت میں غیر معینہ مدت کے لئے بھوک ہڑتال کرنے کا فیصلہ کر لیا۔ ابو حمدیہ کو طبیعت کی ناسازی کی وجہ سے سروکا ہسپتال منتقل کر دیا گیا تھا جہاں انہیں انتہائی نگہداشت کے وارڈ میں داخل کر لیا گیا ہے۔احرار سنٹر کے ڈائریکٹر فواد الخفش نے کہا کہ حماس سے تعلق رکھنے والے 17 اہم اسیروں نے جن میں شیخ جمال ابولھیجا شامل ہیں، بھوک ہڑتال کرنے کا فیصلہ کیا۔الخفش نے یہ خیال ظاہر کیا کہ اگر اسرائیلی جیل انتظامیہ نے ابو حمدیہ کی پیرانہ سالی اور خراب صحت کو خاطر میں نہ لائی اور ان کو رہا کرنے کا فیصلہ نہ کیا تو اسیران مزید احتجاجی طریقے اپنا لیں گے۔خفش کے مطابق 63 سالہ ابو حمدیہ گلے کے سرطان میں مبتلا ہیں اور انہیں جیل سے باہر علاج کی انتہائی ضرورت ہے۔اسلامی تحریک مزاحمت نے اس کے متعلق اسرائیلی حکومت اور جیلروں پر قیدی کی صحت کو نظرانداز کرنے کا الزام لگایا اور ان کو ابو حمدیہ کی زندگی کا ذمہ دار ٹھہرایا۔

مزید : عالمی منظر


loading...