جعلی ڈگری والے 54امید وار بے نقاب ،جنوبی پنجاب کے 7بڑے سیاستدان شامل

جعلی ڈگری والے 54امید وار بے نقاب ،جنوبی پنجاب کے 7بڑے سیاستدان شامل
جعلی ڈگری والے 54امید وار بے نقاب ،جنوبی پنجاب کے 7بڑے سیاستدان شامل

  


ملتان( رپورٹ: الیکشن سیل) الیکشن کمیشن نے مختلف تعلیمی اداروں کی طرف سے جاری کردہ جعلی ڈگری کے حامل 54امیدواروں کے ناموں کی فہرست جاری کردی ہے ۔ فہرست میں ڈگری جاری کرنے والے اداروں کی طرف سے ڈگری جعلی یا منسوخ کئے جانے کی وجوہات بھی جاری کی گئی ہیں۔ اس فہرست کے مطابق جنوبی پنجاب کے 6بڑے سیاسی عہدیداروں کے نام بھی شامل ہے جن میں ضلع لودھراں قومی حلقہ 155سے پاکستان پیپلز پارٹی کے نواب حیات اللہ خان ترین ¾ پی پی حلقہ 209کے رانا اعجاز احمد نون ¾ ضلع ملتان کی تحصیل جلالپوپیروالا قومی حلقہ 153 سے تعلق رکھنے والے مسلم لیگ ق کے دیوان سید عاشق حسین بخاری ¾ ضلع بہاولپور قومی حلقہ 184 کے ملک عامر یاروارن ¾ حلقہ پی پی 271 سے ن لیگ کے حاجی ذوالفقار علی اور ضلع بہاوپور کے حلقہ پی پی 274 سے ن لیگ کے ہی محمد صفدر گل کے نام اور ڈیرہ غازی خان کے میر بادشاہ قیصرانی شامل ہیں ۔ضلع لودھراں کے قومی حلقہ 155کے نواب حیات اللہ خان ترین جو آئندہ انتخابات میں پاکستان پیپلز پارٹی کے ٹکٹ سے انتخابات میں حصہ لینے کے خواہشمند ہیں ۔ نواب حیات اللہ خان ترین کی بی اے کی ڈگری سندھ یونیورسٹی کی طرف سے جعلی قرار دی گئی ہے۔اسی حلقہ 155کے ضمنی حلقہ پی پی 209تحصیل کہروڑپکا اور دنیا پور سے انتخابات میں حصہ لینے والے پیپلز پارٹی کے امیدوار رانا اعجاز نون کی ڈگری ایچ ای سی سے غیر منظور شدہ ادارہ سے حاصل کی گئی تھی جس کی بنا پر جعلی قرار دی گئی ہے ۔ ضلع ملتان کی تحصیل جلالپور پیروالا کے قومی حلقہ 153کے دیوان سید عاشق حسین بخاری جو 1985 ¾ 1988اور 1990میں مسلسل ممبر قومی اسمبلی منتخب ہوتے رہے اس کے بعد 1997میں بھی منتخب ہوئے اور اس کے بعد 2002 میں گریجویشن کی شرط کی وجہ سے انتخابات میں حصہ نہ لے سکے اس کے بعد انہوں نے 2008کے انتخابات کے کیلئے شاہ عبدالطیف یونیورسٹی سے بی اے کی سند حاصل کی اور انتخابات میں حصہ لیا ۔ آئندہ انتخابات 2013کیلئے ان کی بی اے کی ڈگری شاہ عبدالطیف یورنیورسٹی سے جعلی قرار دے دی گئی ہے ۔ ضلع بہاولپور کے قومی حلقہ 184کے ملک عامر یار وارن جنہوں نے 2002کے انتخابات میں پاکستان پیپلز پارٹی کی ٹکٹ سے کامیابی حاصل کی ۔ 2008کے انتخابات میں آزاد حیثیت سے حصہ لیا اورممبر قومی اسمبلی منتخب ہوئے اسی دوران ان کی ڈگری جعلی ثابت ہونے پر ان کو نااہل قرار دیا گیا اور اسی حلقہ میں انہوں نے اپنی سیٹ پر اپنی اہلیہ کو کامیاب کرایا ۔ملک عامر یار وارن کی بی اے کی ڈگری بلوچستان یونیورسٹی سے حاصل کی گئی جس کو انٹرمیڈیٹ کا سرٹیفکیٹ جعلی ہونے کی بنا پرمنسوخ کر دیا گیا تھا ۔ ضلع بہاولپور کے حلقہ قومی اسمبلی 186کے ضمنی حلقہ 274 کے صفدر گل جو 2008کے انتخابات میں ایم پی اے منتخب ہوئے اور پھر ن لیگ میں شامل ہو گئے ۔آئندہ انتخابات 2013کیلئے بھی ن لیگ سے ٹکٹ کے حصول کیلئے کوشاں ہیں۔ صفدر گل کی گریجویشن کی ڈگری سندھ یونیورسٹی سے حاصل کی گئی جس کو یونیورسٹی نے جعلی قرار دے دیا ہے ۔ضلع بہاولپور کے قومی حلقہ 185کے ضمنی حلقہ 271 سے حاجی ذوالفقار علی کی بی اے کی ڈگری کو بھی سندھ یونیورسٹی نے جعلی قرار دے دیا ہے ۔حاجی ذوالفقار علی 2008میں ن لیگ سے ایم پی اے منتخب ہوئے تھے۔ مزید جن امیدواروں کی تعلیمی اسناد کومتعلقہ اداروں کی طرف سے جعلی قرار دیا گیا ہے ان میں سید محد سلیمان محسن ¾ سید اخونزادہ چیتن ¾ غلام دستگیر راجر ¾ وسیم افضل گوندل ¾ سمینہ خاور حیات ¾ سفینہ سمیہ کھر ¾صائمہ عزیز ¾ سردار میر بادشاہ خان قیصرانی ¾ افشاں فاروق ¾ سیمل کامران ¾ فرح دیبا ¾ سیدہ ماجدہ زیدی ¾ شمائلہ رانا ¾ حاجی شیر عاظم خان وزیر ¾ کشور کمار ¾ سید عاقل شاہ ¾ حاجی علی مدد ¾ میر محبت خان مری ¾ نسیم ناصر خواجہ ¾ محمد خان تور ¾ سردار علی ¾ شوکت عزیز بھٹی ¾ ریحانہ یحییٰ بلوچ ¾ مولوی عبیداللہ ¾ شابینہ ریاض ¾ رضوان نویز گل ¾ نوابزادہ طارق مگسی ¾ پیتانبر سیوانی ¾ مکیش کمار ¾ بشیر احمد خان لغاری ¾ نوابزداہ محمد اکبر ¾ مظہر حیات ¾ میر اسراراللہ خان ¾ میر ہمایوں عزیز کرد ¾ شمع پروین مگسی ¾ نوابزداہ میر نادر مگسی ¾ ولی محمد ¾ سید جاوید حسین شاہ ¾ میر احمدان خان ¾ خلیفہ عبدالقیوم خان ¾ گلستان خان ¾ عبدالصمد اخونزادہ ¾ یار محمد ¾ مولوی آغا محمد ¾ ملک اقبال احمد لنگڑیال ¾ ناصر علی شاہ ¾ مولوی حاجی رضی الدین ¾ سردار الحاج محمد عمرکے نام شامل ہیں۔

جعلی ڈگری ہولڈرز

مزید : الیکشن ۲۰۱۳


loading...