2017ء میں شوبز کی ناکام شادیوں میں کچھ ناموں کا اضافہ اور وینا ملک جاناں ملک،نعمان جاوید،نور،ولی حامداور میکال ذوالفقارکی راہیں جدا

2017ء میں شوبز کی ناکام شادیوں میں کچھ ناموں کا اضافہ اور وینا ملک جاناں ...
 2017ء میں شوبز کی ناکام شادیوں میں کچھ ناموں کا اضافہ اور وینا ملک جاناں ملک،نعمان جاوید،نور،ولی حامداور میکال ذوالفقارکی راہیں جدا

  

لاہور(فلم رپورٹر)شوبز میں ناکام شادیوں کی لسٹ اگرچہ بہت طویل ہے جس میں بہت سے پردہ داروں کے نام بھی آتے ہیں لیکن2017ء لسٹ میں کچھ ناموں کا اضافہ اور ہوگیا ہے۔ان فنکاروں نے لومیرج کی اور ان کوناکامی کا سامنا کرنا پڑا۔شادی ایک خوبصورت بندھن ہے جس کا سپنا ہر انسان دیکھتا ہے کیونکہ یہ نہایت اہم مذہبی اور معاشرتی فریضہ بھی ہے ۔ہر انسان کی یہی خواہش ہوتی ہے کہ جس جیون ساتھی کا انتخاب کرے ساری زندگی اسی کے ساتھ گزارے اسی لئے شادی سے پہلے ہرکسی کی کوشش ہوتی ہے کہ اپنے لئے بہترین ساتھی کا انتخاب کرے تاکہ اس کی بقیہ زندگی اچھے طریقے سے گزرے۔ ویسے تو یہ بھی کہا جاتا ہے کہ ارینج میرج زیادہ کامیاب رہتی ہیں لیکن اس کے باوجود اکثر لوگوں کی یہ بھی کوشش ہوتی ہے کہ وہ لومیرج کریں کیونکہ بیشتر لوگوں کا اس بات پر یقین ہے کہ لومیرج زیادہ کامیاب ہوتی ہے ۔بہرحال لومیرج ہو یا ارینج،خوش قسمت انسان اسی کوسمجھا جاتا ہے جس کی شادی کامیاب رہے اور وہ عمر بھر ایک دوسرے کے ساتھ رہیں۔ لیکن شوبز کی دنیا میں کچھ الٹا ہی ہوتا ہے خاص طور پر پاکستان کی انٹرٹینمنٹ انڈسٹری میں اکثر لوگوں نے لومیرج کی کیونکہ ایک ساتھ کام کرتے ہوئے ان لوگوں کو ایک دوسرے کے قریب آنے اور ایک دوسرے کو سمجھنے کا موقع ملتا ہے جبکہ بہت سے لوگ آئیڈیل بھی بنالیتے ہیں اور ان کی اولین کوشش یہی ہوتی کہ صرف آئیڈیل کو ہی جیون ساتھی بنایا جائے۔پاکستان میں اگرچہ شوبز کی دنیا میں لومیرج کا رجحان بہت زیادہ ہے لیکن اس کا قابل افسوس پہلو یہ بھی ہے ایسی شادیوں کی کامیابی کا تناسب تیس فیصد سے بھی کم ہے ۔ وینا ملک نے اسد خٹک سے ،جاناں ملک نے نعمان جاوید سے ،نور نے ولی حامد علی خاں سے اور میکال ذوالفقار نے اپنی بیگم سے راہیں جدا کرنے کا فیصلہ کیا۔وینا ملک کے بارے میں یہ کہا جا رہا ہے کہ انہوں نے تو کافی عرصہ قبل ہی اسد خٹک سے خلع حاصل کرلیا تھا لیکن ان کے اختلافات کی خبریں اس سال منظر عام پر آئیں۔اس بارے میں شوبز کے سینئرفنکاروں کا کہنا ہے کہ شادی اہم اور مقدس فریضہ ہے جس کا فیصلہ جلد بازی کی بجائے نہایت سوچ سمجھ کرکرنا چاہیے لیکن ہمارے ہاں اکثر لوگ جلد بازی اور جذبات میں آکر فیصلہ کرتے ہیں جو بعدازاں غلط ثابت ہوجاتے ہیں اور یوں جلد بازی میں کئے گئے ایسے فیصلوں کی وجہ سے ساری زندگی پچھتانا پڑتا ہے۔اس بارے میں ایک سینئراداکارہ کا کہنا ہے کہ شادی کا فیصلہ دل سے نہیں بلکہ دماغ سے کرنا چاہیے لیکن ہمارے ہاں سب الٹا ہوتا ہے اور شاید وجہ ہے آئے روز ہمیں کسی نہ کسی کی ناکام شادی بارے سننا پڑتا ہے ۔ جب کسی کی شادی ناکام ہوجاتی ہے توا س پر سوائے افسوس کے کچھ اور نہیں کیا جاسکتا لہذہ ایسے فیصلے پہلے ہی سوچ سمجھ کرکرنے چاہیءں تاکہ بعد میں پچھتاوانہ ہو۔

مزید :

کلچر -