این جی اوز اور ویلفیئر سوسائٹی کی رجسٹریشن فیس میں 900فیصد اضافہ

این جی اوز اور ویلفیئر سوسائٹی کی رجسٹریشن فیس میں 900فیصد اضافہ

  

لاہور(جاوید اقبال) میٹروپولیٹن کارپوریشن کی ضلعی حکومت نے این جی اوز اور ویلفیئر سوسائٹیز کی رجسٹریشن میں 900فیصد اضافہ کر دیا ہے۔ محکمہ سوشل ویلفیئر نے رجسٹریشن فیس100سے بڑھا کر ایک ہزار کر روپے دی ہے جبکہ محکمہ انڈسٹری نے فیس 100روپے سے بڑھا کر500روپے کر دی ہے یہ اضافہ رجسٹریشن فارم کی قیمت میں کیا گیا ہے۔ قابل ذکر بات یہ ہے کہ رجسٹریشن فیس میں ہوشر با اضافہ کرنے کے لئے ضلعی حکومت کے ایوان سے منظوری حاصل نہیں کی گئی، بالا بالا ہی ایگزیکٹو آرڈر کے ذریعے اضافہ کر دیا گیا ہے جس کے خلاف مختلف تنظیموں نے سخت ردعمل کا اظہار کیا ہے اور اضافہ واپس لینے کا مطالبہ کر دیا ہے۔ بنایا گیا ہے کہ ضلعی حکومت کے دو ماتحت محکموں محکمہ سوشل ویلفیئر اور محکمہ انڈسٹری نے ایوان سے منظوری لئے بغیر ہی مریضوں، تعلیم، عوام کی فلاح بہبود کے لئے کام کرنے والی تنظیموں کی رجسٹریشن فیس میں اضافہ کر دیا ہے ایسی تنظیمیں جو خود کو مذکورہ محکموں میں رجسٹرڈ کرانے کے لئے درخواستیں جمع کرائیں گی ان پر فیسوں کا اضافی بوجھ ڈال دیا گیا ہے۔ ذرائع کے مطابق اضافہ بلدیاتی اداروں کے وجود میں آنے کے بعد کیا گیا۔ اس سلسلے میں رجسٹریشن فیس میں اضافہ سے قبل ہر ضلع کے دونوں محکموں کو اپنے اپنے متعلقہ ضلعی میٹروپولیٹن کاپوریشن یا تحصیل کونسل کے ایوان سے معاملہ پیش کرنے کی منظوری حاصل کرنا تھی، مگر یسا نہیں کیا گیا۔ دونوں محکموں کے ای ڈی اوز نے اپنے اختیارات کا ناجائز استعمال کرتے ہوئے رجسٹریشن فیسوں میں اضافہ کر لیا ہے جس کے مطابق سوشل ویلفیئر میں رجسٹرڈ ہونے والی تنظیم کی رجسٹریشن فارم فیس100روپے تھی جس میں900روپے کا اضافہ کرتے ہوئے رجسٹریشن فیس ایک ہزار روپے کر لی گئی ہے۔ اسی طرح انڈسٹری اور لیبر ڈیپارٹمنٹ میں رجسٹریشن کرانے والی تنظیموں کی رجسٹریشن فیس میں400روپے کا اضافہ کیا گیا ہے۔ ایک100روپے رجسٹریشن فیس بڑھا کر500روپے کر لی گئی ہے۔ اس حوالے سے ڈائریکٹر سوشل ویلفیئر سعد نسیم وڑائچ سے بات کی گئی تو انہوں نے کہا کہ معاملے کا علم نہیں ہے ایک روز قبل چارج لیا ہے، اضافہ میرے عہدہ سنبھالنے سے قبل کیا گیا ہے اس کا جواب دہ میں نہیں، وہی لوگ ہیں جس نے کہا ہے میں تحقیقات کراؤں گا۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -