مودی کا دورہ مقبوضہ کشمیر ، وادی میں ہڑتال ، حریت قیادت نظر بند

مودی کا دورہ مقبوضہ کشمیر ، وادی میں ہڑتال ، حریت قیادت نظر بند

  

سری نگر(مانیٹرنگ ڈیسک ، اے این این ) مقبوضہ کشمیر میں بھارتی وزیراعظم نریندر مودی کے دورے کے خلاف وادی بھر میں شٹر ڈاون ہڑتال ٗ احتجاج روکنے کیلئے اہم مقامات پر بھارتی فوج کی بھاری نفری تعینات ٗ وادی کے مختلف شہروں میں کرفیو نافذ ٗریاستی انتظامیہ نے حریت قیادت کو گھروں میں نظربندکردیا ٗ وادی میں حالات کشیدہ ٗ بھارتی فوج کی مشتعل مظاہرین پر فائرنگ اور لاٹھی چارج ٗ درجنوں کشمیری زخمی ٗ سری نگر میں جزوی کرفیو ٗ اکثر علاقوں میں لوگ گھروں میں محصور ہوگئے ٗہڑتال سے نظام زندگی مفلوج ٗمظاہرین کے پتھراؤ سے ایک درجن سے زائد اہلکار زخمی ٗحریت قیادت نے آئندہ دو ہفتے کیلئے نیا احتجاجی کلینڈر جاری کر دیا ٗ ترال میں گرفتار طالب علم کو بدستور رہائی نہ مل سکی ۔ تفصیلات کے مطابق بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے جموں سرینگر نیشنل ہائی وے پر 9.2 کلو میٹر طویل سرنگ کے افتتاح کیلئے گزشتہ روز مقبوضہ کشمیر کا دورہ کیا ۔مودی کے دورے کے خلاف حریت قیادت کی اپیل پر پوری مقبوضہ وادی میں شٹر ڈان ہڑتال کی گئی جبکہ احتجاج روکنے کے لیے اہم سڑکوں پر بھارتی فوج کی بھاری نفری تعینات کی گئی ہے۔ وادی کے مختلف شہروں میں کرفیو نافذ کر دیا گیا ہے اور حریت قیادت کو گھروں میں نظر بند کر دیا گیا ہے۔ ضلع کولگام بالخصوص فرصل کی طرف جانے والی بیشتر سڑکوں کو خاردار تار سے بند کردیا گیا تھا جبکہ ضلع میں کسی بھی احتجاجی جلوس یا ریلی کو ناکام بنانے کے لئے سیکورٹی فورسز اور ریاستی پولیس کے اہلکاروں کی بھاری نفری تعینات کی گئی ہے۔ جاں بحق ہونے والے شہریوں کے رسم چہارم اور حریت قیادت کی طرف سے دی گئی کولگام چلو کی کال کے پیش نظر ضلع مجسٹریٹ کولگام نے دفعہ 144سی آر پی سی کے تحت چار یا اس سے زیادہ افراد کے ایک جگہ جمع ہونے پر پابندی عائد کردی ہے۔ کولگام کے لوگوں نے الزام لگایا کہ ان کے علاقوں میں تعینات سیکورٹی فورسز اور ریاستی پولیس کے اہلکاروں نے انہیں اپنے گھروں سے باہر نکلنے کی اجازت نہیں دی۔ انہوں نے کہا کہ ضلع میں بیشتر سڑکوں کو خاردار تاروں سے سیل کیا گیا ہے۔ پابندیوں کے بیچ ضلع کولگام میں مسلسل تیسرے دن بھی ہڑتال رہی۔ ضلع بھر میں مسلسل تیسرے دن بھی دکانیں اور تجارتی مراکز بند رہے جبکہ سڑکوں پر گاڑیوں کی آمدورفت جزوی طور پر متاثر رہی۔گزشتہ دنوں جھڑپ میں جاں بحق ہونے والے مجاہدین اور2شہریوں کے چہارم پر لوگوں کا تعزیت پرسی کیلئے تانتا بندھا رہا اور اس دوران دن بھر دعائیہ مجالس کا سلسلہ جاری رہا۔ کئی حریت لیڈر وں نے جاں بحق نوجوانوں کو شاندار الفاظ میں خراج عقیدت ادا کیا۔ غلام نبی سمجھی،بلال احمد صدیقی، محمد یاسین عطائی، فاروق احمد شاہ، محمد اشرف لایا، ، عبدالرشید لون، محمد رمضان خان، خواجہ فردوس احمد، محمد یوسف میر، ظہیر عباس اور سجاد احمد لون تمام تر پابندیوں کے باوجود کولگام پہنچنے میں کامیاب ہوگئے، جہاں راہنماوں نے لواحقین کے ساتھ اظہارِ تعزیت وہمدردی کیا۔بھارتی وزیراعظم نریندر مودی نے دبے لفظوں میں مقبوضہ کشمیرکے نوجوانوں سے قابض فوجیوں پرپتھراؤکاشکوہ کرتے ہوئے کہاہے کہ کشمیر میں خون خرابے نے صرف ہلاکتیں اورتباہی دی اس سے کسی کوفائدہ نہیں ہوا،40سال اگرسیاحت پرتوجہ دیتے توآج صورتحال یکسرمختصرہوتی، ایک طرف پتھربرسانے والے ہیں اوردوسری طرف کشمیرکے مستقبل کیلئے پتھرتوڑنے والے ،سنگ باز سنگ تراشوں کودیکھیں،ہم نے کشمیرمیں ایشیاء کی سب سے بڑی روڈٹنل بنالی،اس طرح کی مزیدنوٹنلز بنائیں گے ، پاکستان کے عوام کودکھائیں گے کہ ان کے سیاستدان ان کیلئے کچھ نہیں کررہے ، پاکستانی کشمیر کے لوگ بھی دیکھ لیں ترقی کیا ہوتی ہے ؟۔وہ اتوارکومقبوضہ کشمیر کے ضلع اودھم پورمیں کے علاقے بٹل بالیاں میں 9.2کلو میٹرطویل چینانی ناشری آل ویدر روڈ ٹنل کی افتتاحی تقریب سے خطاب کررہے تھے اس ٹنل کی تعمیر سے سرینگر اور جموں کے درمیان مسافت دو گھنٹے کم ہوجائے گی ۔نریندرمودی نے اس ٹنل کی تعمیر پر کشمیر ی عوام کو مبارکباد دی۔ انہوں نے کہاکہ یہ صرف ٹنل ہی نہیں بلکہ جموں وکشمیر کی ترقی کی جانب بڑی چھلانگ ہے ۔ اس موقع پرانہوں نے شکوہ کیاکہ کچھ گمراہ نوجوان پتھراؤ کررہے ہیں جبکہ دیگر نوجوان انہی پتھروں سے بنیادی ڈھانچہ تعمیرکررہے ہیں اوروہ کشمیرکا مستقبل تعمیرکرنے کیلئے پتھرتوڑرہے ہیں۔انہوں نے کہاکہ 40 سال سے زائد عرصے میں بہت سی جانیں ضائع ہوئیں خون خرابے نے کسی کوکچھ نہیں دیااگرانہی چالیس برسوں میں سیاحت پرتوجہ دی جاتی توآج صورتحال یکسرمختلف ہوتی ۔انہوں نے کہاکہ کشمیری نوجوانوں کے پاس دوراستے ہیں سیاحت اوردہشت گردی کا انہیں اس میں سے کسی ایک راستے کاانتخاب کرناہوگا جوسرحدپارکرتے ہیں انہیں اپنی بھی پرواہ نہیں ہوتی۔ انہوں نے کہاکہ اس ٹنل سے کشمیر کے لوگوں کو بہت فائدہ ہوگا ریاست میں سیاحت کو فروغ ملے گا جبسیاحت بڑھے گی تو معیشت بہتر ہوگی ۔انہوں نے کہاکہ مجھے بتایا گیا کہ یہ ٹنل عالمی معیار کے مطابق تعمیر کی گئی ہے بعض اقدامات میں ہم دنیا سے آگے ہیں ۔ اس ٹنل کی تعمیر کے بعد میں کشمیری نوجوانوں کو بتاناچاہتا ہوں کہ پتھر کی طاقت کیا ہے، سنگ بازوسنگ تراشوں کودیکھیں ۔انہوں نے کہاکہ ٹنل کی تعمیرکے بعد ہم پاکستان کے عوام کودکھائیں گے کہ ان کے سیاستدان ان کیلئے کچھ نہیں کررہے۔پاکستان کے زیر انتظام کشمیر کے لوگوں کو دکھاناچاہتے ہیں کہ ترقی کیا ہوتی ہے اورجموں وکشمیر کیسے ترقی کرسکتا ہے ؟ بھارتی وزیراعظم نے کہاکہ ٹنل کی تعمیر سے علاقے کے کاشتکاروں کی تقدیربھی بدل جائیگی اس طرح کی مزید نو ٹنل کی تعمیر زیر غور ہے ۔ انہوں نے دعویٰ کیاکہ ہم نے ہمالیہ کے ماحول کے تحفظ کیلئے کام کیا ہے۔اس سے پہلے نریندر مودی نے ریاستی گورنراین این ووہرا اورکٹھ پتلی وزیراعلیٰ محبوبہ مفتی کے ہمراہ کھلی جیب میں ٹنل پر کچھ فاصلے تک سفربھی کیا۔

مقبوضہ کشمیر

مزید :

صفحہ اول -