امتناع قادیانی آرڈیننس پر عملدرآمد یقینی بنایا جائے، ناموس رسالتؐ قانون پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہو سکتا: ختم نبوت کانفرنس

امتناع قادیانی آرڈیننس پر عملدرآمد یقینی بنایا جائے، ناموس رسالتؐ قانون پر ...

  

لاہور (سٹی رپورٹر) انٹرنیشنل ختم نبوت کانفرنس نے قرار دیا ہے کہ عقیدہ ختم نبوت واضح اسلامی بیانیہ ہے‘ ناموس رسالتؐ قانون پر کوئی سمجھوتہ نہیں ہو سکتا‘ ارتدادی سرگرمیوں کے تدارک کیلئے امتناع قادیانی آرڈیننس پر عملدرآمد یقینی بنایا جائے‘ توہین آمیز ویب سائٹس اور گستاخ بلاگرزکے خلاف کارروائی کرکے مکروہ نیٹ ورک کی کمر توڑی جائے۔ ایوان اقبال لاہور میں انٹرنیشنل ختم نبوت موومنٹ کے زیر اہتمام سالانہ ختم نبوت کانفرنس کی صدارت مرکزی نائب امیر مولانا عبدالرؤف مکی نے کی جبکہ پنجاب علماء بورڈ کے چیئرمین مولانا حافظ فضل الرحیم اشرفی‘ مولانا سید کفیل شاہ بخاری‘ مولانا محمد الیاس چنیوٹی‘ مولانا محمد عمر‘ مولانا عبدالصمد‘حافظ لقمان‘ مولانا محب النبی‘ مولانا زاہد الراشدی‘ قاری محمد رفیق وجھوی‘ جسٹس (ر)خواجہ محمد شریف‘ افتخار اللہ شاکر‘ مفتی شاہد محمودمکی‘ مولانا محمد زبیر‘ مولانا قاضی محمود الحسن‘ مفتی عتیق الرحمن مکی ’مولانا عبدالشکور حقانی اور و دیگرنے کانفرنس سے خطاب کیا۔اس موقع پرنو جوان عمران نے رکن پنجاب اسمبلی مولانا الیاس چنیوٹی کے ہاتھ پر اسلام قبول کیا۔ مولانا عبدالرؤف مکی اور مولانا حافظ فضل الرحیم اشرفی نے کہا ہے کہ عقیدہ ختم نبوت کا تحفظ ہر مسلمان کی ذمہ داری ’ ایمان کا تقاضا’آخرت میں نجات اور شفاعت رسول ﷺکا آسان ذریعہ ہے۔ سید کفیل بخاری اورنو مسلم نصیر سندھو نے قادیانیوں کو دعوت اسلام دیتے ہوئے کہا کہ وہ مرزاکی کتابوں پر تحقیق کرلیں،اسکے تضادات کا جائزہ لیں ان پر حقائق کھل جائیں گے۔نو مسلم عمران نے انکشاف کیا کہ انہیں کروڑوں روپے اور امریکہ کے ویزے کا لالچ دیا گیا جو انہوں ٹھکرا دیا۔ اس موقع پر ایوان اقبال کا ہال اللہ اکبر کے نعروں سے گونج اٹھا۔انٹرنیشنل ختم نبوت موومنٹ کے مرکزی رہنما مولانا افتخار اللہ شاکر نے قراردادیں پیش کیں جنہیں اتفاق رائے سے منظور کرلیا گیا ۔قراردادوں میں کہا گیا کہ ناموس رسالت قانون میں کسی قسم کی چھیڑ چھاڑ کی بجائے اس کی روح کو سمجھتے ہوئے اسے موثر بنایا جائے‘ سوشل میڈیا پر گستاخانہ مواد کی تشہیر کے بعد مقتدر حلقوں کی آنکھیں کھل جانی چاہئیں کہ 295 سی ناگزیر شق ہے‘ سرکاری ٹیلی ویژن اور ریڈیو پر ختم نبوت کے حوالے سے پروگرام نشر کئے جائیں جبکہ نصاب تعلیم میں بھی ختم نبوت کے خصوصی ابواب شامل کئے جائیں‘ آج کا یہ اجتماع سوشل میڈیا سے گستاخانہ مواد ہٹوانے اور قانون ناموس رسالت کے تحفظ پر جسٹس شوکت عزیز کو خراج تحسین پیش کرتا ہے‘ یہ اجتماع امیر ختم نبوت مولانا عبدالحفیظ مکیؒ کی ختم نبوت کیلئے گراں قدر خدمات پر انہیں خراج عقیدت پیش کرتا ہے‘ ان کا خلاء مدتوں پر نہیں ہو گا۔مذکورہ کانفرنس میں قادیانیت سے تائب ہو کر اسلام قبول کرنے والے شکیل احمد‘ شمس الدین‘ سردار احمد‘ مرزا عمران‘ محمود احمد فوجی‘ طاہر احمد‘ نصیر احمد سندھو‘ سہیل احمد‘ نذیر احمد اور واجد ہاشمی نے بھی شرکت کی جبکہ اس موقع پر افتخار اللہ شاکر کی دستار بندی کی گئی۔

مزید :

صفحہ آخر -