کمزور خارجہ پالیسی سے پاکستان ’’پراکسی وار‘‘ کی آماجگاہ بن گیا: مولانا فضل الرحمٰن

کمزور خارجہ پالیسی سے پاکستان ’’پراکسی وار‘‘ کی آماجگاہ بن گیا: مولانا فضل ...

  

نوشہرہ(آن لائن)جمعیت علماء اسلام(ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمن نے کہا ہے ہماری خارجہ پالیسی ہمیشہ سے کمزور رہی ہے کیونکہ ہم نے پاکستان کو دوسروں کیلئے استعمال کیا اور اپنے ملک کو پراکسی جنگوں کی آماجگاہ بنا دیا، چائنا کی کمیونسٹ پارٹی نے جے یو آئی (ف) کو رسمی طور پر فرینڈز پارٹی ڈکلیئر کیا ہے، پاک چین فرینڈ شپ اقتصادی دوستی میں تبدیل ہورہی ہے،ہمیں امریکہ کی غلامی کی بجائے چین کی طرف جانا ہوگا ۔گزشتہ روز اجتماع سے خطاب کرتے ہوئے سربراہ جے یو آئی ف کا مزید کہنا تھا اسلام کو غلط طریقے سے پیش کیا جارہا ہے تمام مسلم امہ کو متحد ہونا ہو گا ، جمعیت علماء اسلام وہ جماعت ہے جس کو چائنا کی کمیونسٹ پارٹی نے رسمی طور پر فرینڈز پارٹی ڈکلیئر کیا ہے اور کمیونسٹ پارٹی کے ذمہ داران نے کئی مرتبہ چائنا آنے کی دعوت بھی دی ہے ہمیں چائنا کیساتھ فرینڈ شپ کو مزید تقویت دینی ہو گی ۔ سی پیک ملک کیلئے روشن مستقبل کے طور پر دیکھا جارہا ہے تو ہمیں بھی بطور عوام اسکی فلاح کیلئے اہم کاوشیں کرنا ہوں گی تاکہ اس میں رکاوٹیں ڈالنے والوں کو احساس ہو یہ ہمارا منصوبہ ہے۔انکا کہنا تھاکہا جاتا ہے امریکہ طاقتور ملک ہے اور ہم امریکہ کے محتاج ہیں ایسے تصورات کے بعد تو پھر ہم نے امریکہ کی غلامی ہی کرنی ہے ۔ستر سال کے بعد پاک چین دوستی اقتصادی دوستی میں تبدیل ہورہی ہے جو بہت بڑی مثبت پیشرفت ہے لیکن بدقسمتی سے ہماری خارجہ پالیسی ہمیشہ کمزور رہی ہے اور ہم نے اپنے ملک کو دوسروں کیلئے استعمال کیا ہے جس کی وجہ سے ہمارا ملک پراکسی جنگوں کی آماجگاہ بن گیا ہے اگر سنجیدگی کا مظاہرہ کیا جائے تو آج بھی ہم ان مسائل سے نکل سکتے ہیں اور یہی ہمارا ویژن بھی ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -