خیبرپختونخوا میں گیس اور بجلی بند کر کے غلامی کا احساس پیدا کیا جا رہا ہے :بلور

خیبرپختونخوا میں گیس اور بجلی بند کر کے غلامی کا احساس پیدا کیا جا رہا ہے ...

  

پشاور( سٹاف رپورٹر ) عوامی نیشنل پارٹی کے مرکزی سینئر نائب صدر حاجی غلام احمد بلور نے کہا ہے کہ خیبر پختونخوا کے عوام پر گیس اور بجلی بند کر کے غلامی کا احساس پیدا کیا جا رہا ہے اور اس سے لوگوں میں احساس محرومی پیدا ہو رہا ہے،اپنے ایک اخباری بیان میں انہوں نے کہا کہ ہمارا صوبہ خیبر پختون اس حوالے سے انتہائی بدنصیب ہے کیونکہ اٹھارویں ترمیم میں یہ کہا گیا ہے جو چیز جس صوبے میں پیدا ہوتی ہے اُسی صوبے کا حق سب سے پہلے اس پر ہوتا ہے ۔ گیس جو ہمارے صوبے میں ضرورت سے زیادہ پائی جاتی ہے لیکن ہمارے صوبے میں لوگوں کو گیس نہیں مل رہی ۔ بلکہ پشاور جو کہ اس صوبے کا دارالخلافہ ہے پر گیس کا نام و نشان تک نہیں رہا،اُنہوں نے کہا کہ بجلی بھی ہمارے صوبے میں ضرورت سے زیادہ پیدا ہوتی ہے لیکن ہمارے صوبے کے عوام پر بارہ بارہ گھنٹے دیہات میں اور چھ چھ گھنٹے شہروں میں لوڈ شیڈنگ کی جا رہی ہے۔ اور ہمارے عوام کو ان کے حقوق نہیں ملتے، ہمارے ملک کی خام تیل کی 52% پیداوار یہاں ہوتی ہے۔ لیکن ان کی ریفائنری پنجا ب میں کی جاتی ہے۔ اگر ہمارے صوبے میں یہ ریفائنریز لگائی جائیں تو اس سے سینکڑوں لوگوں کو روزگار کے مواقع مل سکتے ہیں۔اُنہوں نے کہا کہ ہماری بدقسمتی ہے کہ ہمارے ساتھ سوتیلی ماں کا سلوک کیا جاتا ہے ایسا لگتا ہے کہ ہم غلام ہیں۔ پاکستان کی سالمیت اور استحکام کے لیے ضروری ہے کہ ہمارے صوبے کے عوام کو بھی اُن کے جائز حقوق ملنے چاہئیں۔ اور ہماری شکایات پر مرکزی حکومت کو غور و فکر کرنی چاہیے اور جو ہمارے صوبے اور عوام کی ضرورت ہے وہ ہمیں ملنی چاہئے ۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -