تجاوزات کے خاتمے کے لئے مہم چلائی جارہی ہے ، وسیم اختر

تجاوزات کے خاتمے کے لئے مہم چلائی جارہی ہے ، وسیم اختر

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر ) میئر کراچی وسیم اختر نے کہا ہے کہ تجاوزات کے خاتمے کے لئے شہر میں بھرپور مہم چلائی جارہی ہے اور سپرمارکیٹ لیاقت آباد کے سامنے اور اطراف سے تجاوزات کے خاتمے کے لئے آپریشن شروع کیا جا رہاہے انہوں نے کہا کہ رمضان المبارک کی آمد کے پیش نظر شہر کے مختلف علاقوں سے تجاوزات کا خاتمہ کیا جائے گا تاکہ ٹریفک کی روانی کو بہتر کیا جاسکے، یہ بات انہوں نے سپرمارکیٹ لیاقت آباد کے تفصیلی دورے کے موقع پر کہی، ڈائریکٹر جنرل ورکس شہاب انور، سینئر ڈائریکٹر اینٹی انکروچمنٹ نذیر لاکھانی، ڈائریکٹر لینڈ نجم الزماں، ڈائریکٹر ٹیکنیکل سید محمد شکیب اور دیگر افسران بھی ان کے ہمراہ تھے، میئر کراچی نے کہا کہ کراچی کی بڑی بڑی شاہراہوں پر خصوصاً ایمپریس مارکیٹ، صدر، حیدری مارکیٹ، گلشن اقبال، لیاقت آباد، لائٹ ہاؤس، ایم اے جناح روڈ، اردو بازار، سائیکل مارکیٹ اور دیگر علاقوں میں مبینہ طور پر لوگوں نے تجاوزات قائم کی ہوئی ہیں، دکانوں کے آگے دس دس فٹ تک سامان رکھا جاتا ہے ، ٹھیلے اور پتھاروں کے ذریعے راستے بلاک کئے جاتے ہیں جس سے شہریوں کو پیدل چلنے میں دشواریوں کے ساتھ ساتھ ٹریفک کی روانی میں بھی خلل پڑتا ہے ، انہوں نے کہاکہ سپر مارکیٹ لیاقت آباد کے قیام کا مقصد بہترین ماحول میں شہریوں کو خریداری کی سہولت مہیا کرنا تھا لیکن تجاوزات کے باعث یہاں کی دکانیں بند پڑی ہیں اور شہری یہاں آنے سے گھبراتے ہیں اور پارکنگ نہ ہونے کے سبب جو دکانیں کھلی تھیں وہ بھی آہستہ آہستہ بند ہوگئیں انہوں نے کہا کہ سپرمارکیٹ میں انڈر گراؤنڈ پارکنگ کی سہولت مہیا کی گئی تھی لیکن اس انڈرگراؤنڈ جانے والی سڑک کو ٹھیلے اور پتھاروں لگا کر بند کردیا گیا جس کے باعث وہاں پارکنگ نہیں ہوسکتی، انہوں نے کہا کہ کروڑوں روپے سے تعمیر شدہ یہ عمارت تجاوزات کی وجہ سے ناقابل استعمال ہوگئی ہے جس کے باعث بلدیہ عظمیٰ کراچی اس عمارت سے ہونے والی آمدنی سے بھی محروم ہوتی جا رہی ہے ، میئر کراچی نے کہا کہ تجاوزات کے خلاف ہونے والے آپریشن میں شہری تعاون کریں یہ انہی کی بہتری کے لئے کیا جائے گا، انہوں نے شہریوں اور خصوصاً سپرمارکیٹ لیاقت آباد کے اطراف دکانداروں، پتھارے اور ٹھیلے لگانے والے لوگوں سے اپیل کی کہ وہ ازخود وہاں سے تجاوزات ختم کردیں ، میئر کراچی نے کہا کہ پورے شہر کو ایک سوچی سمجھی سازش کے تحت تجاوزات کے ذریعے بند کیاجا رہا ہے اور جگہ جگہ قبضہ کرنے کا منصوبہ بنایا جا رہا ہے جس سے پارکس ، باغات، کھیل کے میدان ، سرکاری زمینیں، عمارتیں اور مارکیٹیں کچھ بھی محفوظ نہیں انہوں نے کہاکہ بہت ہوچکا اب ہمیں اس شہر کو بہتری کی طرف لانا ہے اور اگر شہری ہمارے ساتھ بھرپور تعاون کریں گے تو شہر کو بہتر کرنے ، سنوارنے، سجانے اور بلدیاتی سہولتیں فراہم کرنے میں آسانی ہوگی۔ میئر کراچی نے سپر مارکیٹ لیاقت آباد میں دکانداروں سے ملاقات کی اور ان سے درخواست کی کہ وہ تجاوزات کے خاتمے اور سپرمارکیٹ کو فعال کرنے میں ہمارا ساتھ دیں، میئر کراچی نے کہا کہ سپرمارکیٹ میں کے ایم سی کے پبلک ڈیلنگ سے متعلق کچھ دفاتر قائم کئے جائیں گے تاکہ شہریوں کو اپنے علاقوں کے قریب ہی سہولت میسر آئے۔

مزید :

راولپنڈی صفحہ آخر -