بھارت میں 28سالہ جرمن خاتون کے ساتھ3افراد کی اجتماعی زیادتی، ملزم تاحال گرفتار نہ ہو سکے

بھارت میں 28سالہ جرمن خاتون کے ساتھ3افراد کی اجتماعی زیادتی، ملزم تاحال ...
بھارت میں 28سالہ جرمن خاتون کے ساتھ3افراد کی اجتماعی زیادتی، ملزم تاحال گرفتار نہ ہو سکے

  

ممبئی(ڈیلی پاکستان آن لائن) بھارت میں سیاحت کے لیے آئی ہوئی ایک جرمن خاتون کو3 افراد نے جنسی زیادتی کا نشانہ بنایا ہے۔ریاست تامل ناڈو کی پولیس کے مطابق جرمن خاتون نے بتایا ہے کہ وہ ماماللاپورم کے سیاحتی قصبے کے ایک ساحلی ہوٹل میں ٹھہری ہوئی تھیں اور ساحل پر چہل قدمی کے دوران نامعلوم افراد نے انھیں زبردستی اپنے ساتھ لے کر مبینہ طور پر جنسی تشدد کیا۔

نہرو اور جادیو یونیورسٹی کے بعد کلکتہ میں بھی کشمیر، منی پور اور ناگالینڈکی آزادی کے نعرے بلند ہوگئے

ضلعی پولیس افسر سنتوش نے فرانسیسی خبر رساں ایجنسی "اے ایف پی" کو بتایا کہ واقعے کی رپورٹ درج کر کے تحقیقات شروع کر دی گئی ہیں اور مشتبہ افراد کی تلاش کے لیے بھی کارروائی کا آغاز کر دیا گیا ہے۔ان کا کہنا تھا خاتون کا طبی معائنہ کروایا گیا ہے جس سے یہ ثابت ہوتا ہے کہ خاتون سے زیادتی کی گئی ہے۔بھارتی میڈیا کے مطابق یہ خاتون پانچ دیگر جرمن شہریوں کے ساتھ یہاں سیاحت کے لیے آئی ہوئی تھیں۔

”یہ بک گئی گورمنٹ۔۔۔“ اس آنٹی کو تو آپ بڑی اچھی طرح جانتے ہوں گے؟ ان کی ایک نئی ویڈیو سامنے آ گئی ہے، اب کی بار کیا کہہ رہی ہیں؟ آپ بھی جانئے

بھارت میں غیر ملکی سیاح خواتین کے ساتھ ایسے واقعات پہلے بھی ہوتے رہے ہیں۔ گزشتہ ماہ ہی سیاحوں میں مقبول ریاست گوا میں ایک 28 سالہ آئرش خاتون کو زیادتی کے بعد قتل کر دیا گیا تھا۔اس خاتون کی برہنہ لاش کھیتوں کے قریب ساحل سے ملی تھی جس پر تشدد کے نشانات بھی پائے گئے۔

وہ بات جوجہاز میں بیٹھ کر ایئر ہوسٹس سے نہیں کرنی چاہیے ورنہ ۔۔۔

متعدد ممالک اپنے شہریوں کو متنبہ کر چکے ہیں کہ بھارت میں سفر و سیاحت کے دوران ان کے ساتھ ایسے ناخوشگوار واقعات پیش آ سکتے ہیں لہذا وہ اپنی حفاظت کو ملحوظ خاطر رکھیں۔

مزید :

بین الاقوامی -