پنجاب یونیورسٹی کو ڈگریوں کی تصدیق اور ایکولینس سرٹیفکیٹس جاری کرنے کا اختیا رنہیں ،ہائی کورٹ نے فیصلہ دے دیا

پنجاب یونیورسٹی کو ڈگریوں کی تصدیق اور ایکولینس سرٹیفکیٹس جاری کرنے کا ...
پنجاب یونیورسٹی کو ڈگریوں کی تصدیق اور ایکولینس سرٹیفکیٹس جاری کرنے کا اختیا رنہیں ،ہائی کورٹ نے فیصلہ دے دیا

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )لاہورہائیکورٹ نے پنجاب یونیورسٹی کی طرف سے ڈگریوں کی تصدیق اور ایکولینس سرٹیفکیٹ جاری کرنے کا اختیار غیر قانونی قرار دیتے ہوئے ایکولینس ڈیپارٹمنٹ کوکالعدم کردیا ہے ۔

ہائی کورٹ نے تحریک انصاف کے چیئرمین یونین کونسل کی نااہلی کا فیصلہ معطل کردیا

جسٹس عاطر محمود نے یہ حکم محمد شیراز کی درخواست پر جاری کیا، عدالت نے اپنے فیصلے میں قرار دیا ہے کہ ڈگریوں کی تصدیق کا اختیار صرف ہائر ایجوکیشن کمیشن کے پاس ہے، پنجاب یونیورسٹی کو ڈگریوں کی تصدیق اورانہیں دیگر یونیورسٹیوں کے مساوی قرار دینے کاسرٹیفکیٹ جاری کرنے کا اختیار حاصل نہیں ہے، عدالت میں درخواست گزار نے موقف اختیار کیا کہ پنجاب یونیورسٹی نے داخلے کے لئے ایکولینس سرٹیفکیٹ کے ذریعے ڈگری کی تصدیق کی شرط عائد کر رہا ہے جوغیرقانونی ہے، ڈگریوں کی تصدیق صرف ہائر ایجوکیشن کمیشن کا اختیار ہے جبکہ پنجاب یونیورسٹی ایکولینس سرٹیفکیٹس کے نام پرطالب علموں سے کروڑ وںروپے غیر قانونی طور پروصول کرچکی ہے ، درخواست گزار کی جانب سے عدالت سے استدعا کی گئی کہ پنجاب یونیورسٹی کے ایکولینس ڈیپارٹمنٹ کو ختم کرنے کا حکم دیا جائے، ایچ ای سی نے عدالت میں موقف اختیار کیاکہ ایچ ای سی آرڈیننس کے تحت ڈگریوں کی تصدیق صرف ایچ ای سی کا اختیار ہے،وفاقی قانون سازی فہرست بھی ڈگریوں کی تصدیق کااختیار ہائرایجوکیشن کمیشن کو دیتی ہے، ایکولینس ڈیپارٹمنٹ کی آڑمیں پنجاب یونیورسٹی ڈگریوں کی تصدیق کا متوازی نظام چلا رہی ہے جوغیرقانونی ہے۔

مزید :

لاہور -