فیسو ں کی وصولی،حکومت اور نجی ادارے آمنے سامنے

فیسو ں کی وصولی،حکومت اور نجی ادارے آمنے سامنے

  

لاہور(ڈویلپمنٹ سیل) نجی تعلیمی ادارے لاک ڈاؤن کی وجہ سے پوری فیس لینے کے لئے بضد،محکمہ تعلیم کی طرف سے فیسوں میں 20فیصد کمی کی تجویز اپنی جگہ لیکن والدین نے جب تک تعلیمی ادارے بند ہیں تب تک فیس معافی کا مطالبہ کر دیا۔تفصیلات کے مطابق31مئی کے بعد گرمیوں کی چھٹیوں کی فیسوں کا میچ ہونا ابھی باقی ہے،پنجاب حکومت اور نجی تعلیمی ادارے اہم ایشو پر آمنے سامنے ہو گئے،گھروں میں قید والدین نے وزیر اعلیٰ سے امیدیں وابستہ کر لیں۔صوبائی وزیر قانون راجہ بشارت نے مسئلہ کے حل کے لئے اجلاس بلایا،دونوں فریق راضی نہ ہوئے تو وزیر اعلیٰ پنجاب فیصلہ کر یں گے۔اس حوالے سے نجی تعلیمی اداروں کے ذمہ داران کا کہنا ہے کہ حکومت کے ساتھ مکمل تعاون کرنے کو تیار ہیں لیکن اساتذہ کی فیسں عمارتوں کے کرائے کی ادائیگی کی وجہ سے فیس معافی ممکن نہیں۔دوسری جانب والدین کاکہنا ہے کہ کاروبار کی بندش سے بچوں کا پیٹ پالنا مشکل ہو چکا ہے اس لئے یوٹیلٹی بل اور گرمیوں کی چھٹیوں کی فیس معاف کی جائے،ویگن اور رکشہ والے بھی ادائیگیوں کیلئے دباؤ ڈال رہے ہیں وزیر اعظم او ر وزیر اعلیٰ فوری مداخلت کریں

۔۔

مزید :

میٹروپولیٹن 1 -