کرونا کا کسی فرقے سے تعلق نہیں،مرنیوالوں کیلئے شہید یا جاں بحق کا لفظ استعمال کیا جائے: اسلام نظریاتی کونسل

  کرونا کا کسی فرقے سے تعلق نہیں،مرنیوالوں کیلئے شہید یا جاں بحق کا لفظ ...

  

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)اسلامی نظریاتی کونسل پاکستان کے چیئرمین قبلہ ایازنے کہا ہے کہ کرونا کا کسی فرقے سے تعلق نہیں، وائرس سے انتقال کرنے والوں کیلئے شہید یا جاں بحق کا لفظ استعمال کیا جائے،آئمہ مساجد کی گرفتاری کے بجائے ان کا تعاون حاصل کرنا چاہئے۔اسلام آباد میں میڈیا سے گفتگو میں ڈاکٹر قبلہ ایاز نے کہا کہ کرونا وائرس کی وجہ سے پیدا ہوانے والی موجودہ صورتحال میں عوام سے توقع ہے کہ وہ نمازیں گھروں میں ادا کریں گے۔ڈاکٹر قبلہ ایاز نے عوام سے اپیل کی کہ وہ نمازیں گھروں پر ادا کریں تاکہ میل جول میں فاصلوں کو یقینی بنایا جاسکے البتہ مساجد کی تالا بندی اور بندش کا تاثر نہیں جانا چاہیے۔قبلہ ایاز نے مزید کہا کہ نمازیوں کی تعداد سے متعلق حکومتی اقدامات کی تعمیل ہونی چاہیے،کرونا سے انتقال کرنیوالوں کی نماز جنازہ میں قریبی رشتہ داروں کو شرکت کی اجازت دینی چاہیے۔چیئرمین اسلامی نظریاتی کونسل نے کہا کہ اجتماعی عبادات سے متعلق حکومتی اقدامات کی حمایت کرتے ہیں۔ کرونا ویکسین کی تیاری کیلئے جو ماہرین اور بین الاقوامی ادارے تحقیق کررہے ہیں ہم ان کی تائید کرتے ہیں۔قبلہ ایاز نے کہا کہ صاحب استطاعت افراد معاشی دباؤ کے شکار افراد کیلئے عطیہ کریں، معاشی بیروزگاروں کی کفالت واعانت کا انتظام مساجد کے ذریعے کرنانہایت مفید ہوگا، مساجد کو کمیونٹی سینٹر کا درجہ دیا جائے ورمساجد کے آئمہ کواس کارخیرمیں شریک کیا جائے۔چیئرمین اسلامی نظریاتی کونسل نے کہا کہ کروناسے وفات پانے والوں کی میت کو ممکنہ طریقے سے احتیاطی تدابیرکیساتھ غسل دینے کااہتمام کیاجائے، کرونا سے متاثرین کیلئے مذہبی و علاقائی امتیازات سے ماورا اقدامات کئے جائیں۔انہوں نے کہا کہ اقلیتی برادری کی مدد کی جائے، زکوٰۃ سے ممکن نہیں تو صاحب استطاعت دیگرطریقوں سے مدد کریں۔قبلہ ایاز نے مزید کہا کہ عمرہ یا زیارات کیلئے جو رقم صاحب استطاعت افراد نے جمع کروائی ہے وہ کرونا متاثرین کیلئے عطیہ کریں، کروناسے وفات پانے والوں کی تدفین کرتے ہوئے تکریم و احترام انسانیت کا مکمل خیال رکھا جائے۔انہوں نے کہا کہ احتیاطی تدابیر لازماً اختیار کی جائیں لیکن خوف اور ڈر کا ماحول نہ بنایا جائے، بیرون ممالک یا اندرون ملک پھنسے افراد کیلئے حکومت مناسب انتظامات کا اہتمام کرے۔قبلہ ایاز نے تجویز دی کہ معاشی بیروزگاروں کی کفالت کا انتظام مساجد کے ذریعے بہتر ہوگا، مساجد کے منتظمین کو معلوم ہوتا ہے کہ کون صاحب استطاعت اور کون ضرورت مند ہے۔

اسلامی نظریاتی کونسل

مزید :

صفحہ اول -