تبلیغی جماعت کیساتھ امتیازی سلوک ناقابل برداشت ہے‘ ڈاکٹر عبدالرزاق

تبلیغی جماعت کیساتھ امتیازی سلوک ناقابل برداشت ہے‘ ڈاکٹر عبدالرزاق

  

ملتان (سٹی رپورٹر)تبلیغی جماعت کے وابستگان پر ظلم و ستم اور ان کے خلاف بے بنیاد پروپیگنڈا کر کے اللہ رب العزت کے غیض و غضب کو دعوت مت دیں تبلیغی جماعت کے ساتھ امتیازی سلوک ناقابل برداشت ہے حکومت بیوروکریسی پولیس اور میڈیا کو واضح ہدایات جاری کریں جماعت کی کردار کشی کرنے والے عناصر مشکل کی اس گھڑی میں قومی وحدت کو سبوتاژ کرنا چاہتے ہیں تبلیغی جماعت کی آڑ میں اسلام دشمنی کے اظہار کی کوئی کوشش کامیاب(بقیہ نمبر32صفحہ6پر)

نہیں ہونے دیں گے۔ تبلیغی جماعت کے خلاف بے بنیاد پروپیگنڈا کرنے پر مؤثر آواز اٹھانے پر قائد جمعیۃ مولانا فضل الرحمن، سپیکر قومی اسمبلی، مسلم لیگ ق کے مرکزی رہنما چوہدری پرویز الٰہی ودیگر کو خراج تحسین پیش کرتے ہیں ان خیالات کا اظہارعالمی مجلس تحفظ ختم نبوت کے مرکزی امیر استاذا لمحدثین مولاناڈاکٹر عبدالرزاق اسکندر، نائب امراء مولانا خواجہ عزیز احمد، مولانا پیرحافظ ناصرالدین خان خاکوانی، مرکزی سیکرٹری جنرل مولانا عزیز الرحمن جالندھری، مولانااللہ وسایا، مولانامحمداسماعیل شجاع آبادی، مولانا عزیز الرحمن ثانی، مبلغ ختم نبوت مولانا عبدالنعیم، مولاناوسیم اسلم، مولانا حا فظ محمدانس نے اپنے ایک مشترکہ بیان میں کیا انہوں نے کہا کہ مشکل کی اس گھڑی میں تبلیغی جماعت کے احباب پر ظلم و ستم اور ان بے لوث لوگوں کی دل شکنی و دلآزاری اللہ رب العزت کے غیض و غضب کو دعوت دینے کے مترادف ہے۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ تبلیغی جماعت کی کردار کشی کا سلسلہ فی الفور بند کیا جائے۔ علماء نے کہا کہ تبلیغی جماعت کی کردار کشی کرنے والے عناصر قومی وحدت کے دشمن ہیں انہیں بے نقاب کیا جائے انہوں نے کہا کہ تبلیغی جماعت پاکستان کا روشن چہرہ ہے اور ان کی خدمات کا عالمی سطح پر اعتراف کیا جاتا ہے انہیں بے یار و مددگار سمجھنے کی غلط فہمی دور کر لی جائے۔ علماء نے مطالبہ کیا کہ حکومت بیوروکریسی,پولیس اور میڈیا کو اس حوالے سے فوری اور واضح ہدایات جاری کرے کہ تبلیغی جماعت کے احباب کے ساتھ کسی قسم کی زیادتی روا نہ رکھی جائے۔ بیرون اور اندرون ملک مختلف مقامات پر پھنسے ہوئے تبلیغی جماعت کے احباب کو دیگر پاکستانیوں کی طرح جملہ سہولیات مہیا کی جائیں اورانہیں باحفاظت اپنے گھروں تک پہنچانے کا انتظام کیا جائے۔

ڈاکٹر عبدالرزاق

مزید :

ملتان صفحہ آخر -