پنجاب اسمبلی نے بلوں کی آئینی مدت پوری ہونے کے بعد نوٹیفکیشن جاری کر دیا

پنجاب اسمبلی نے بلوں کی آئینی مدت پوری ہونے کے بعد نوٹیفکیشن جاری کر دیا

ؒٓؒٓٓلاہور(نمائندہ خصوصی( پنجاب اسمبلی نے گورنر پنجاب سردار لطیف کھوسہ کو بھیجے گئے سات بلوں کی 10دن کی آئینی مدت کا انتظار کر نے کے بعد نوٹیفیکشن جاری کر دیا ۔ جس کے بعد بل قانونی شکل اختیار کر گئے ہیں۔ 16سے 19جولائی 2012 تک جاری رہنے والے پنجاب اسمبلی کے اجلاس میں پنجاب اسمبلی نے گورنر پنجاب کی جانب سے آئین کے آرٹیکل 116کے تحت اعتراض لگا کر واپس بجھوائے گئے سات مختلف بلوں پر آئین کے آرٹیکل 113کے تحت نظر ثانی کے بعد ایک بار پھر منظوری کے لیے گورنر پنجاب کو بجھوایا۔ جس پر گورنرپنجاب آئینی طور پر پابند تھے کہ مقررہ دس دنوں کے اندر اندر ان بلوں پر دستخط کر دیتے لیکن دس روز گزرنے کے باوجودگورنر پنجاب سردار لطیف کھوسہ نے ان سات بلوں پر دستخط نہ کئے جس پر پنجاب اسمبلی نے آئینی مدت گزرنے پر از خود ہی ان بلوں کو قانونی شکل دینے کے لیے نوٹیفیکشن جاری کر دیا جن بلوں کو قانونی شکل دینے کا نوٹیفیکشن جاری کیا گیا ان میں

پنجاب سول سرونٹس بل     Punjab Civil Servents Bill)) ،

 پارکس اینڈ ہارٹیکلچر بل     (Parks and Horticulture Authority Bill) ،

 پنجاب سپرویژن آف کریکلم بل   (Punjab Supervision of Circulam Bill) ،

 پنجاب اینیمل سلاٹر کنٹرولر بل   (Punjab Animal Salughter Control Bill) ،

 یونیورسٹی آف ہیلتھ سائنسز بل   (University of Health Sceinces Bill) ،

 کنگ ایڈورڈ میڈیکل کالج یونیورسٹی بل (King Edward Medical College University Bill) اور پنجاب ایگریکلچر یونیورسٹی بل   (Punjab Agriculture University Bill) شامل ہیں۔

مزید : صفحہ آخر