عمران نے کبھی ٹیکس نہیں دیا، مجھے عدالت لیکر نہ گئے تو دستاویزات سامنے لے آﺅ ں گا، چودھری نثار

عمران نے کبھی ٹیکس نہیں دیا، مجھے عدالت لیکر نہ گئے تو دستاویزات سامنے لے آﺅ ...

اسلام آباد(اے پی اے )قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف چودھری نثار علی خان نے کہا ہے کہ تحریک انصاف کے سربراہ عمران خان نے ٹیکس چوری کیا، چیلنج کرتا ہوں مجھے عدالت لے کر جائیں،تحریک انصاف کے چیئرمین عمران خان نے ملک اور بیرون ملک اثاثے بنائے اور ٹیکس چوری کی، کروڑوں کا گھر بنایا مگر ٹیکس ریٹرن میں اس کا ذکر نہیں . عمران خان 350 کینال کے گھر میں رہتے ہیں،پیسہ کہاں سے آرہا ہے حالانکہ ان کا کوئی ذریعہ معاش نہیں ہے۔ چودھری نثار کا کہنا تھا کہ عمران خان کی تنقید کا محور مسلم لیگ ن اور نواز شریف ہیں۔ یہ واحد سیاستدان ہیں جو صرف اپوزیشن پر تنقید کرتے ہیں۔ عمران خان کو حکمرانوں کے کرتوت نظر نہیں آتے۔ ان کا کہنا تھا کہ عمران خان بار بار مجھے چیلنج کر رہے ہیں۔میں عمران خان کو چیلنج کرتا ہوں کہ مجھے عدالت لے کر جائیں. اسلام آباد میں پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے قائد حزب اختلاف چودھری نثار علی خان نے کہاکہ عمران خان نے 1971ءسے 1992ءتک اپنی کمائی پر ٹیکس نہیں دیا، عمران کو ہماری لیڈر شپ کے اثاثوں پر شک ہے تو کمیشن بناکر تحقیقات کی جائیں، الزامات کا حل یہ ہے کہ ہم اور عمران ثبوت لے کر چیف جسٹس پاکستان کے پاس جائیں.چوہدری نثار علی کا کہنا ہے کہ عمران خان کی سیاست مسلم لیگ (ن)کے خلاف الزام اور بہتان کے سوا کچھ نہیں ، ان کی سیاست اپوزیشن پر تنقید نہیں بلکہ اپنی مخالف جماعت پر تنقید ہے، عمران خان کو زرداری کی حمایت میں اے این پی اور ایم کیو ایم نظر نہیں آتیں. تحریک انصاف ایم کیو ایم اور پیپلزپارٹی سے ملی ہوئی ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ عمران خان کی تنقید کا محور مسلم لیگ (ن) اور نواز شریف ہیں، الزامات کی سیاست کا اب کوئی حل نکلنا چاہئے. حسن نواز اور حسین نواز کے بیرون ملک کاروبار اور اثاثے ان کی محنت کا نتیجہ ہیں اور دونوں پر برطانیہ اور سعودی عرب میں کروڑوں کے قرضے ہیں. چوہدری نثار نے چیلنج کرتے ہوئے عمران خان کو کہا کہ اگر وہ مجھے عدالت لے کر نہیں گئے تو ان کی ٹیکس دستاویزات منظر عام پر لے آئیں گے، انہوں نے کہا عمران خان کا کوئی ذریعہ معاش نہیں ، عمران خان سیاسی جماعت چلا رہے ہیں، وہ پیسہ کہاں سے آ رہا ہے. شریف برادران نے اپنے اثاثے محنت سے بنائے ہیں وہ عمران خان کی طرح زکوٰة کے پیسے نہیں کھاتے ۔ انہوں نے کہا کہ لانگ مارچ کے وقت عمران خان کہاں تھے ،رحمان ملک اور عمران خان ایک زبان بولتے ہیں ۔ یہ ایک دوسرے پر تنقیدنہیں کرتے ۔ پیپلزپارٹی بھی ٹارگٹ مسلم لیگ ن کو کرتی ہے جبکہ تحریک انصاف بھی ن لیگ کو ٹارگٹ کرتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کیری لوگر بل اور جی ایس ٹی پر ن لیگ نے آواز اٹھائی ،ن لیگ نے ہر ہر جگہ حکومت کا راستہ روکا ، عمران خان کو اگر اطمینان نہیں مل رہا تو وہ برطانیہ کی عدالتوں میں جاکر شریف برادران کی پراپرٹی کیخلاف کیسز کر لیں یا میں اور عمران خان دونوں سپریم کورٹ آف پاکستان میں پیش ہو جاتے ہیں ، سپریم کورٹ خود ہی فیصلہ کر لے ۔ عمران خان کسی عدالت میں بھی جائیں ہم سامنا کرینگے ۔ انہوں نے کہاکہ عمران خان اقتدار میں آ کر ٹیکس اکٹھا کیسے کرینگے وہ تو خود ہی ٹیکس نہیں دیتے ، عمران خان نے کہا کہ 300کینال کا پلاٹ گفٹڈ ہے جبکہ بعد میں کہا کہ لندن میں فلیٹ بیچ کر یہ پلاٹ خریدا تھا جمائمہ خان نے بتایا کہ یہ لندن والا فلیٹ عمران خان نے میرے نام کیا تھا جو بے نامی تھا ، عمران خان مجھے عدالت میں لیکر جائیں نہیں لے کر جائینگے تو بہت سی چیزیں میں ان کے خلاف پیش کرونگا۔ انہوں نے تحریک انصاف کے قائد عمران خان کے الزامات کو مسترد کرتے ہوئے کہا کہ نواز شریف مقروض نہیں ، انکے بیٹے کے پاس وائٹ منی ہے ، عمران خان جس چیف جسٹس سے راضی ہیں اس کے پاس چلے جاتے ہیں ۔ کھلی اور شفاف تحقیق ہو تو پتہ چل جائے گا، عمران خان نے 32سالہ کیئریئر میں کبھی ٹیکس نہیں دیا ۔ وہ کیا انقلاب لائینگے پہلے اپنے گھر تو انقلاب لائیں ، عمران خان الزام تراشی کی سیاست بند کر دیں ،یو ٹرن لینا عمران خان کی سیاست کا حصہ ہے ۔انہوں نے قائد تحریک انصاف عمران خان کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ خان صاحب اپنی بات پر قائم رہنا ااور مجھے عدالت میں لیکر جانا ، عمران خان کو چیلنج کرتا ہوں کہ مجھے عدالت لیکر جائیں پھر دیکھنا کیا کیا کھلتا ہے ۔

مزید : صفحہ اول