موضع شاہدرہ کے پٹوار خانہ میں آتشز گی ، سامان خاکستر ریکارڈ محفوظ

موضع شاہدرہ کے پٹوار خانہ میں آتشز گی ، سامان خاکستر ریکارڈ محفوظ

  



لاہور (عامر بٹ سے) ضلع کچہری اور ماڈل ٹاﺅن کچہری میں لگائے جاتے ہوئے آتشزدگی کے بعد موضع شاہدرہ کے پٹوار خانے میں بھی رات گئے پرسرار طور پر لگائی جانے والی آگ کے باعث پٹوار خانے میں موجود ردی کے ریکارڈ اور کمرے میں پڑے جوتے قالین جل کر راکھ ہوگیا۔ پٹوار خانے میں موجود ایرکولر میں موجود پانی بھر جانے کے باعث پٹوار خانے ریکارڈ کو جلانے کیلئے لگائی گئی آگ معجزانہ طور پر بجھ گئی۔ اے سی سٹی نے نامعلوم افراد کے خلاف مقدمہ درج کرنے کا حکم دیدیا۔ مزید معلوم ہوا ہے کہ رات گئے موضع شاہدرہ کے پٹوار خانے میں دانستہ طور پر چند نامعلوم افراد نے بند کمرے میں پٹرول پھینک کر آگ لگادی اور موقع سے فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے تاہم آگ نے کمرے میں موجود جوتوں اور ردی کو اپنی لپیٹ میں لے لیا اس دوران کمرے میں موجود ایر کولر کا پانی بہر جانے کے باعث آگ بجھ کررہ گئی۔ محمد جمیل جس کے پاس اس وقت موضع شاہدرہ کا چارج دیا گیا تھا نےر ات گئے ہی اعلیٰ افسران کو پٹوار خانے میں لگائی جانے والی آتشزدگی سے آگاہ کردیا گیا۔ ”روزنامہ پاکستان“ سے گفتگو کرتے ہوئے محمد جمیل خانگو اور موجودہ حلقہ پٹواری جمیل احمد خان کا کہنا ہے کہ 28 تاریخ کو ان کو موضع شاہدرہ کا چارج ملا تھا اور 4 روز بعد ہی پٹوار خانے میں موجود ریکارڈ کو جلانے کی کوشش بھی کی گئی تا ہم اللہ کا لاکھ لاکھ شکر ہے کہ ریونیو ریکارڈ مکمل طور پر محفوظ ہیں، انتقال یا کسی رجسٹری یا دستاویز کو کوئی نقصان نہیں پہنچا ہے۔ حلقہ پٹواری کا مزید کہنا ہے کہ یہ آگ موضع شاہدرہ میں ہونے والی بے ضابطگیوں پر پردہ ڈالنے کی کوشش بھی ہے۔ اور اس میں کوئی ایسا عملہ بھی موجود ہے جو کہ شاہدرہ میں موجود ریکارڈ کے حوالے سے آگاہی رکھتا ہے یہی وجہ ہے کہ ساتھ ساتھ 6 پٹوارخانوں کی موجودگی کے باوجود صرف موضع شاہدرہ میں آگ لگانے کی کوشش کی گئی ہے۔

مزید : میٹروپولیٹن 1