چین پاکستان کا اہم سٹرٹیجک پارٹنر ہر مشکل میں ہمارے ساتھ کھڑا ہوا، جنرل راشد محمود

چین پاکستان کا اہم سٹرٹیجک پارٹنر ہر مشکل میں ہمارے ساتھ کھڑا ہوا، جنرل راشد ...

                             اسلام آباد(اے این این) چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی جنرل راشد محمود نے چین کوپاکستان اہم سٹرٹیجک پارٹنرقراردیتے ہوئے کہاہے کہ باہمی سٹرٹیجک تعلقات عالمی مسائل کے حل کیلئے دونوں ملکوں کیلئے مدد گار ثابت ہونگے، خطے کے اہم مسائل پر ہمارا نظریہ ایک ہے، دہشت گردی سے نمٹنے کیلئے پاکستان چین سے تعاون کرے گا، اگر اسی طرح حالات سے نمٹتے رہے تو جلد دہشت گردوں کو شکست دے دیں گے،چینی پیپلزلبریشن آرمی خطے اورعالمی سطح پرامن واستحکام کےلئے اہم کرداراداکررہی ہے ۔گزشتہ روزچین کے ملٹری اتاشی جنرل کی ہواجن نے چینی پیپلز لیبریشن آرمی کے 87 ویںیوم تاسیس کے سلسلے میں ایک استقبالیے کا اہتمام کیا جس میں چیئرمین جوائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی جنرل راشد محمود مہمان خصوصی تھے جبکہ استقبالیے میں سینٹ کی قائمہ کمیٹی برائے دفاع کے چیئرمین مشاہد حسین سید، پاک بحریہ کے سربراہ ایڈمرل آصف سندھیلہ، پاکستان میں امریکی سفیر رچرڈ اولسن سمیت پاکستان کے دیگر اعلیٰ فوجی اور سول حکام نے شرکت کی۔ پاکستان نے چینی سفیر سن وی ڈونگ نے مہمانوں کا استقبال کیا۔ اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے جنرل راشد محمود نے چین کے ساتھ فوجی تعلقات اور سٹرٹیجک شراکت داری کو سراہا۔ انہوں نے کہا کہ چین مشکل کی ہر گھڑی میں پاکستان کے ساتھ کھڑا ہوا۔ امید ہے کہ دونوں ملکوں کے عوام کی مشترکہ خواہشات کے مطابق وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ ہمارے باہمی تعلقات مزید مضبوط ہونگے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کو چین کے ساتھ خاص طورپر دفاعی شعبے میں سٹرٹیجک شراکت داری پر فخر ہے ہم چین کے ساتھ اپنے ان تعلقات کو انتہائی اہمیت دیتے ہیں اور سمجھتے ہیں کہ یہ تعلقات خطے میں امن و استحکام کا باعث ہیں۔ جنرل راشد محمود نے چین کی پیپلز لیبریشن آرمی کی جانب سے اپنے ملک میں امن اور ترقی کے فروغ میں کردار کو سراہتے ہوئے کہاکہ پی ایل اے عالمی سطح پر بھی امن و ہم آہنگی کے حوالے سے نمایاں کردار ادا کررہی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پیپلز لبریشن آرمی باہمی ترقی کیلئے ممالک کی سطح پر تعلقات کو مضبوط بنانے میں اہمیت کی حامل رہی ہے ۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان اور چین کاخطے کے اہم مسائل پر نظریہ ایک ہے۔ دہشت گردی سے نمٹنے کیلئے پاکستان چین سے تعاون کرے گا۔ اگر اسی طرح حالات سے نمٹتے رہے تو تو جلد دہشت گردوں کو شکست دے دیں گے۔ انہوں نے کہا کہ باہمی سٹرٹیجک تعلقات عالمی مسائل کے حل کیلئے دونوں ملکوں کیلئے مدد گار ثابت ہونگے۔ انہوں نے کہا کہ عالمی مسائل پر پاکستان اور چین کے خیالات میں ہم آہنگی ہے دونوں ملک باہمی مشاورت جاری رکھے ہوئے ہیں۔ غیر یقینی صورتحال سے نمٹنے کیلئے ہماری مشاورت مزید بامقصد ہوگی۔اس موقع پر چین کے ملٹری اتاشی نے کہا کہ پیپلز لبریشن آرمی نے خود کو ایک جدید فورس کے طورپر استوار کیا اور اس نے علاقائی اور عالمی سطح پر امن و استحکام برقرار رکھنے میں نمایاں کردار ادا کیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان اور چین کے درمیان سٹرٹیجک شراکت داری وقت گزرنے کے ساتھ ساتھ فروغ پارہی ہے اور اسے مزید مضبوط بنانے کی گنجائش موجود ہے۔ انہوں نے کہا کہ چین پاکستان کے ساتھ اپنے سفارتی اور فوجی تعلقات کو بہت اہمیت دیتا ہے۔ جنرل کی ہواجن نے پاکستان میں خدمات سرانجام دینے کے دوران میجر جنرل کے عہدے پر اپنی ترقی پر خوشی کا اظہار کیا اور خواہش ظاہر کی کہ وہ پاکستان کے ساتھ دفاعی شعبے میں تعلقات کو مزید مضبوط بنانے کیلئے ایک پل کے طورپر کام کریں۔ انہوں نے دونوں ملکوں کے عوام کے درمیان روایتی دوستی کو سراہا ۔ اس موقع پر مہمانوں نے پیپلز لبریشن آرمی کے یوم تاسیس پر چینی حکام کو مبارکباد دی اور تعمیر و ترقی کے شعبوں میں چین کی فوج کی کامیابیوں کی تعریف کی۔ اس موقع پر کیک بھی کاٹا گیا۔

جنرل راشد محمود

مزید : علاقائی