سعودی عرب :شدت پسند خواتین کی بحالی کا پروگرام شروع

سعودی عرب :شدت پسند خواتین کی بحالی کا پروگرام شروع
سعودی عرب :شدت پسند خواتین کی بحالی کا پروگرام شروع

  

جدہ (نیوز ڈیسک) سعودی محکمہ داخلہ نے اس بات کی تصدیق کی ہے کہ شدت پسند خیالات کی حامل خواتین کی بحالی کے لئے خصوصی پروگرام کا آغاز کیا جارہا ہے۔ محکمہ داخلہ کے ترجمان میجر جنرل منصور الترکی نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ جن خواتین کو دہشتگردی کی کارروائیوں میں حصہ لینے کے الزام میں گرفتار کیا گیا ہے، مردوں کی طرح ان کی بحالی اور ان کے خیالات کی درستگی کے لئے خصوصی پروگرام شروع کیا جارہا ہے اور اس سلسلے میں ان خواتین کے خاندان والوں سے بھی مدد لی جائے گی۔ یاد رہے کہ دہشتگردی کی جانب مائل ہونے کا رجحان رکھنے والے افراد کے لئے سعودی عرب میں ”محمد بن نائف کنسلٹنگ اینڈ کیئر سنٹر“ قائم ہے۔ یہاں پر شدت پسند خیالات کے حامل افراد کے رویوں میں تبدیلی کے لئے ان کا علاج کیا جاتا ہے۔ تاہم مردوں کے مقابلے میں خواتین کی تعداد کافی کم ہے اور خیال کیا جارہا ہے کہ یہاں خواتین کے لئے علیحدہ ڈیپارٹمنٹ بنایا جائے گا۔ سعودی عرب اب تک القاعدہ سے تعلق رکھنے والے 166 افراد کو علاج کے بعد رہا کر چکا ہے۔ گزشتہ ہفتے یمن نے القاعدہ میں شمولیت اختیار کرنے والی سعودی خاتون کو واپس سعودی عرب کے حوالے کیا تھا۔ بتایا گیا تھا کہ یہ خاتون اپنے خاندان والوں کو بتائے بغیر القاعدہ میں شمولیت کے لئے یمن پہنچ گئی تھی۔

مزید : بین الاقوامی